آئی ایم ایف کا حکم سرآنکھوں پر، کتنے ارب پٹرولیم لیوی لگے گی؟

9imfpetrollevyshehbazrazi.jpg

وفاقی حکومت نے آئی ایم ایف کی جانب سے کیے گئے تمام مطالبات کو تسلیم کرتے ہوئے عوام پر اربوں روپے کا نیا بوجھ ڈالنے کی تیاری کر رکھی ہے۔ عالمی مالیاتی ادارے کو لکھے گئے لیٹر آف انٹینٹ کی تفصیلات سامنے آ گئیں جس کے مطابق حکومت پٹرول پر 50 روپے فی لیٹر لیوی لگانے کیلئے بھی رضامند ہے۔

پاکستان کی طرف سے آئی ایم ایف کو بجھوائے گئے اظہارِ آمادگی کی تفصیلات کے مطابق یکم ستمبر سے پٹرول پر 10، ڈیزل پر 5 روپے لیوی بڑھائی جائے گی، جبکہ ستمبر میں پیٹرول پر لیوی بڑھ کر 30 اور ڈیزل پر 15 روپے ہو جائے گی۔


رواں سال میں ہی آنے والے مہینوں میں لیوی میں مزید پانچ پانچ روپے لیٹر اضافہ کیا جائے گا، جنوری 2023 تک لیوی بڑھ کر 50 روپے فی لیٹر تک ہو جائے گی۔ یاد رہے ملک میں اس وقت پیٹرول پر 20 ڈیزل، اور مٹی کے تیل پر 10 روپے لیوی عائد ہے۔

جبکہ آئی ایم ایف کو بھیجے گئے خط کے مطابق رواں مالی سال میں پٹرولیم لیوی کی مد میں 855 ارب روپے وصول کرنے کا ہدف ہے۔ پاکستان نے آئی ایم ایف کو لیٹر آف انٹینٹ دستخط کرکے واپس بجھوا دیا ہے۔

اس حوالے سے وفاقی وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل نے بھی پریس کانفرنس میں بتایا تھا کہ میں نے اور گورنر اسٹیٹ بینک نے آئی ایم ایف کے لیٹر آف انٹینٹ پر دستخط کر دیئے ہیں۔
 
Sponsored Link