ادویات کی قیمتوں میں اضافے کی خبریں،چیئرمین ایف بی آر نے وضاحت کردی

4medicinefbr.jpg

ایف بی آر (فیڈرل بورڈ آف ریونیو) کے چیئرمین اشفاق احمد نے سینیٹ کی قائمہ کمیٹی خزانہ کے اجلاس میں بتایا کہ ادویات کی قیمتوں میں اضافہ نہیں ہوگا اور ادویات والے شعبے کو ٹیکس ریفنڈ بروقت ملے گا۔

تفصیلات کے مطابق سینیٹ کی قائمہ کمیٹی کے اجلاس میں چیئرمین ایف بی آر نے بھی شرکت کی۔ انہوں نے کمیٹی کے شرکا کو بریفنگ کے دوران کہا کہ ٹیکس فری سلائی مشین کی درآمد کو غلط طریقے سے استعمال کیا جارہا ہے۔

چیئرمین ایف بی آر کےجواب پر رہنما پیپلزپارٹی فاروق ایچ نائیک نے کہا کہ اس کو روکنا آپ کے ادارے کا کام ہے، سلائی مشین پر سیلز ٹیکس سے عام آدمی کی مشکلات میں اضافہ ہوگا، امیر لوگ تو بوتیک جاتے ہیں لیکن بہت سے غریب اب بھی اپنے کپڑے خود سلائی کر کے پہنتے ہیں۔

چیئرمین ایف بی آر اشفاق احمد نے قائمہ کمیٹی اجلاس کو بتایا کہ آئی ایم ایف کہتا ہے تیزی سے ریفنڈ دیں اورغریبوں کو ڈائریکٹ سبسڈی دیں، رہ جانے والی زرعی اشیا پر بھی سیلز ٹیکس عائد کیا جائے اور سیلز ٹیکس میں تمام فرق کو آئندہ 5 ماہ میں ختم کردیا جائے اس پر کام جاری ہے۔


سربراہ ایف بی آر نے بتایا کہ فیڈرل بورڈ آف ریونیو 48 گھنٹے میں ریفنڈ دے رہا ہے اور اس کا ریفنڈ نظام 98 فیصد درستگی پر چل رہا ہے۔ یہ واضح کرنا چاہتے ہیں کہ ادویات کی قیمتوں میں اضافہ نہیں ہوگا اور اس شعبے کو ریفنڈ بروقت ملے گا۔

فیڈرل بورڈ آف ریونیو کے حکام نے اجلاس کو بتایا کہ نمک پر بھی سیلز ٹیکس عائد کر دیا گیا ہے جبکہ ائیر لائنز کی عارضی درآمدی اشیا پر بھی سیلز ٹیکس عائد کیا گیا ہے، ملک میں موجود ایئرلائنز سیلزٹیکس میں رجسٹرڈ ہو کر ریٹرنز فائل نہیں کرنا چاہتیں مگر اس کیلئے بھی کام کیا جا رہا ہے۔
 
Sponsored Link