حکومت نے اقدامات نہ کیے تو آٹا 200 روپے کلو ہو جائے گا:فلار ملز ایسوسی ایشن

shhebaz-ataa-200-kg.jpg


ملک میں گندم کا شارٹ فال 30 لاکھ ٹن تک پہنچ چکا ہے جس کے بعد گندم اور آٹے کی قیمت میں مزید اضافہ ہونے کا امکان ہے اس وقت سو کلو کی بوری 7400 روپے ہے .فلار ملز مالکان نے آئندہ چند روز میں ملز چکی آٹے کی قیمت 100 روپے فی کلو کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔

روزنامہ جنگ کے مطابق ملز مالکان کا کہنا ہے کہ 74 روپے فی کلو گندم خرید کر 65 روپے کلو میں آٹا فروخت نہیں کرسکتے۔ اس حوالے سے پاکستان فلار ملز ایسوسی ایشن کے چیئرمین کا کہنا ہے کہ اس وقت ملک میں 70 لاکھ ٹن گندم کے ذخائر ہیں، لیکن وفاقی اور صوبائی حکومتیں یہ گندم مارکیٹ میں فروخت نہیں کررہیں۔

چیئرمین پی ایف ایم اے نے انکشاف کیا اس وقت 30 لاکھ ٹن کا شارٹ فال ہے لیکن اس کے اثرات دسمبر جنوری میں آئیں گے۔ حکومت دسمبر تک گندم کے 30 لاکھ ٹن کے سودے کرلے تاکہ دسمبر اور جنوری میں میں گندم کی قلت نہ ہو اگر ایسا نہ کیا تو آئندہ سال آٹا 200 روپے کلو ہوجائے گا۔

انہوں نے تجویز دی کہ اس وقت حکومتوں کے پاس جو 70 لاکھ ٹن گندم جمع ہے اس کو مارکیٹ میں لے آئے اس فیصلے سے پورے ملک میں آٹے کی قیمت 60 روپے تک آجائے گی۔ حکومت سندھ اور پنجاب نے کرپشن سے متعلق اتنی پابندیاں لگا رکھی ہیں جس کی وجہ سے ملوں گندم کی خریداری بند ہے۔

انہوں نے کہا اگر حکومت نے آٹا سستا کرنا ہے تو گندم کی نقل وحمل کو فری کردیا جائے ،پنجاب اور سندھ حکومت سرحدی چوکیاں ختم کردیں تو آٹا 60 روپے کلو تک آجائے گا۔ ورنہ یاد رکھیں ملک میں گندم کا بحران شدت اختیار کر رہا ہے۔
 
Advertisement

Qudsi

Minister (2k+ posts)
یہ سب فلور مل والے دھمکا کر اپنی مرضی کے ریٹ لگوانے لگے ہیں.
نون لیگی ہیں سب
 

thinking

Prime Minister (20k+ posts)
Almost all traders are Pmln supporters becoz they said..Khud khata ha tu kia howa..hamaya bhi tu khilata ha...
 
Sponsored Link