سیلاب کی تباہی:کتنے فیصد پاکستانیوں کو آئندہ برس بھی سیلاب کا خدشہ ؟

flood-in-pakistan-next-year-cm.jpg


ملک بھر میں سیلاب نے تباہی مچائی ہوئی ہے، عوام خوفزدہ ہیں، جبکہ عوام نے مزید سیلاب کا خدشہ بھی ظاہر کردیا ہے،اس حوالے سے خدشہ اپسوس پاکستان کے سروے میں کیا گیا،جس میں 65فیصد پاکستانیوں نے آئندہ سال ملک میں مزید سیلاب آنے کے خدشےظاہر کردیا، سب سے زیادہ شرح خواتین ، بزرگوں اور دیہی آبادی میں مقیم افراد نے سیلاب کا خدشہ ظاہر کیا،

32فیصد پاکستانیوں نے سیلاب سے اپنے اپنے صوبے کو بھی سب سے زیادہ زیادہ خطرہ ہونے کا بتایا،شرح خیبرپختونخوا میں سب سے زیادہ 40فیصد رہی، خواتین، بزرگ اور دیہی آبادی نے زیادہ خدشے کا اظہار کیا، ایک ہزار سے زائد افراد نے حصہ لیا،پنجاب میں 35فیصد ، سندھ میں 24فیصد جبکہ بلوچستان میں 30فیصد نے سیلاب سے اپنے صوبے کو زیادہ خطرہ ہونے کا کہا۔

یہ سروے 07سے 12ستمبر 2022 کے درمیان کیا گیا، سروے میں اگلے سال مزید سیلاب آنے کا امکان کے سوال پر65فیصد پاکستانیوں نے اس خوف کا اظہار کیا کے ملک میں اگلے سال مزید سیلاب آسکتے ہیں،35 فیصد نے کہا کے اگلے سال سیلاب کا کوئی خطرہ نہیں۔

سیلاب آنے کے خدشے کا اظہار سب سے زیادہ خواتین ، بزرگوں اور دیہی آبادی میں رہنے والے افراد نے کیا۔ مردوں میں سیلاب آنے کے خدشے کا اظہار 65فیصد نے کیا لیکن خواتین میں 75فیصد نے سیلاب آنے کےخوف کا اظہار کیا ۔

31سے 40سال کی عمر کے 72فیصد افراد نے ملک میں سیلاب آنے کے خوف کا اظہار کیا،41سے50سال کی عمرکے 70فیصد لیکن 51سے 65سال کی عمر کے 81فیصد افراد نے سیلاب آنے کے خدشےکا سب سے زیادہ اظہار کیا ۔اسی طرح شہری آبادی میں اگلے سال مزید سیلاب آنے کا 66فیصد تو دیہی آبادی میں 72فیصد نے کہا۔

سیلاب سے کس کو سب سے زیادہ خطرہ ہے ؟ اس سوال پر 51فیصد نے پورے پاکستان کو سب سے زیادہ خطرہ ہونے کا بتایا،جبکہ 32فیصد نے اپنے اپنے صوبے کو سیلاب سے سب سےزیادہ خطرہ ہونے کا کہا،24فیصد نے اپنی برادری یا کمیونٹی کو ، جبکہ 11 فیصد نے سیلاب سے خود کو سب سے زیادہ خطرے میں ہونے کا کہا۔
 

Dr Adam

Prime Minister (20k+ posts)

اس سال والا سیلاب ختم ہو گا تو اگلے سال والے کا سوچیں گے
 
Sponsored Link