شوہر کو قتل کرکے لاش ٹکڑے کرنے کے کیس میں خوفناک انکشافات منظرعام پر

karachi-wife-husband-11123.jpg


کراچی: صدر کے علاقے میں شوہر کو قتل کرنے کئے بعد اسکی لاش ٹکڑے کرنے کے کیس میں اہم انکشافات سامنے آگئے ہیں۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق کراچی کے علاقے صدر میں 70 سال کے شخص کو قتل کرنے کے بعد لاش کے ٹکڑےکرنے کے کیس میں اہم انکشافات سامنے آئے ہیں۔پولیس کی انویسٹی گیشن کے مطابق 70 سالہ شوہر کو بے دردی سے قتل کرنے والی عاصمہ نامی خاتون آئس نشے کی عادی ہے۔

پولیس تفتیش کے مطابق خاتون عاصمہ رباب اور اس کا شوہر شیخ سہیل دونوں گزشتہ 7 سال سے آئس کا نشہ کررہے تھے، 2013 میں مقتول شیخ سہیل اور گرفتار خاتون رباب عرف عاصمہ کی شادی ہوئی تھی۔

پولیس کے مطابق دونوں میاں بیوی اکثر نشے میں ایک دوسرے سے لڑتے اور 2،2 ماہ تک ناراض بھی رہتے تھے۔پولیس انویستی گیشن کے مطابق جس رات قتل ہوا ۔

اس رات دونوں مل کر آئس کا نشہ کررہے تھے، خاتون حد سے زیادہ نشہ کرچکی تھی تاہم مقتول نشہ کرتا اور باہر آتا جاتا رہا جس کی وجہ سے خاتون دونوں میں جھگڑا شروع ہوگیا۔

خاتون نے نشے کی حالت میں پہلے شوہر کو تھپڑ مارا جس پر دونوں گتھم گھا ہوگئے، اسی دوران خاتون کے ہاتھ ایک لوہے کی راڈ لگی جو اس نے اپنے شوہر کے سر پر راڈ ماری جس سے اسکے سر سے خون نکلنے لگا۔

خون بہتا دیکھ کر خاتون شوہر کا خون صاف کرنے لگی لیکن اس دوران دونوں کے درمیان پھر تلخ کلامی شروع ہوگئی جس پر خاتون زخمی شوہر کو تشدد کا نشانہ بناتی رہی اور شوہر زندگی کی بازی ہار گیا۔

خاتون نے پھر لاش کے ٹکرے کرنا شروع کر دیے، پہلے گردن اور بعد میں ہاتھ کاٹے اور کھڑکی سے باہر پھینک دئیے ۔مقتول کے ہاتھ کھڑکی سے باہر پھینکتے ہوئے چوکیدار نے دیکھا، خاتون نیچے آئی اور دونوں ہاتھ اٹھا کر ساتھ لے گئی

پولیس کے مطابق خاتون گرفتاری کے 2 روز بعد تک نشے میں تھی۔خاتون کی ایک ویڈیو بھی سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی تھی جس میں وہ عدالت پیشی کے موقع پر مسکرارہی تھی اور ایسا لگ رہا تھا جیسے وہ نشے کی حالت میں ہو۔

 
Advertisement
Last edited:
Sponsored Link