شہبازشریف لیکس پر غریدہ فاروقی اور طلعت حسین کا ردعمل

talh1111h1.jpg


وزیراعظم شہباز شریف کی مریم نوا ز کے داماد سے متعلق گفتگو کی مبینہ آڈیو ٹیپ سامنے آگئی ہے جس میں ایک شخص سے گفتگو میں مبینہ طور پر شہباز شریف کو بتایا جارہا ہےکہ مریم نواز اپنے داماد کیلئے بھارت سے پاور پلانٹ درآمد کرنے کا کہہ رہی ہیں۔

اسکے علاوہ وزیرِ اعظم ہاؤس میں ہونے والے مسلم لیگ ن کے رہنماؤں اور وفاقی وزراء کے اجلاس کی آڈیو لیک ہو گئی۔ آڈیو میں مبینہ طور پر ن لیگی رہنما اور وفاقی وزراء پی ٹی آئی اراکینِ اسمبلی کے استعفوں پر بات کر رہے ہیں جس میں وزیرِ داخلہ رانا ثناء اللّٰه، خواجہ آصف، ایاز صادق سمیت دیگر رہنماؤں کی آوازیں سنی جا سکتی ہیں۔

اپنے ٹوئٹر پیغام میں طلعت حسین کا کہنا تھا کہ شہباز شریف لیک سے پتا چلا کہ کہ پی ایم آفس مکمل طور پر بگڈ ہے ۔دوسرا پاکستان کے کسی وزیراعظم کی کوئ بات چیت محفوظ نہیں۔ تیسرا بگ کیا مواد لیک کرنے میں کوئ رکاوٹ یا ہچکچاہٹ نہیں صرف موقع کی مناسبت درکار ہے

ان کا مزید کہنا تھا کہ اس بگنگ کو روکنے والے تمام ادارے ناکام ہیں اور مزید لیکس ہوں گی۔

ایک اور ٹوئٹر پیغام میں طلعت حسین نے لکھا کہ شہباز حکومت آیڈیو لیکس تہلکہ خیز ہیں۔ وزیر اعظم کو دی گئی رپورٹ کے مطابق جاسوسی کے عمل میں دوسرے طریقوں کے علاوہ موبائل کے سپیکر کے ذریعے بات چیت سنی اور ریکارڈ کی گئی۔

انہوں مزید کہا کہ اگر یہ کسی فرد یا گروہ نے کیا ہے تو اس سے خطرناک اور کیا ہو گا۔ اور اگر اندر سے ہوا تو وہ اس سے بھی برا۔

غریدہ فاروقی کا اس پر کہنا تھا کہ وزیراعظم ہاؤس کی آڈیو لیکس انتہائی سنگین سیکورٹی مسئلہ ہے۔ اس کی فوری اور کڑی تفتیش لازم ہے اور حقیقت عوام کے سامنے لائی جانی چاہیے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ کن عناصر نے یہ کام کیا ہےاور اس کا مقصد کیا ہے۔ یہ مخصوص جاسوسی کب سے ممکن پائی ہے؛ کئی اھم سوالات ہیں جنکا براہِراست تعلق ملکی سلامتی سے ہے۔
 

jakfh

Senator (1k+ posts)
talh1111h1.jpg


وزیراعظم شہباز شریف کی مریم نوا ز کے داماد سے متعلق گفتگو کی مبینہ آڈیو ٹیپ سامنے آگئی ہے جس میں ایک شخص سے گفتگو میں مبینہ طور پر شہباز شریف کو بتایا جارہا ہےکہ مریم نواز اپنے داماد کیلئے بھارت سے پاور پلانٹ درآمد کرنے کا کہہ رہی ہیں۔

اسکے علاوہ وزیرِ اعظم ہاؤس میں ہونے والے مسلم لیگ ن کے رہنماؤں اور وفاقی وزراء کے اجلاس کی آڈیو لیک ہو گئی۔ آڈیو میں مبینہ طور پر ن لیگی رہنما اور وفاقی وزراء پی ٹی آئی اراکینِ اسمبلی کے استعفوں پر بات کر رہے ہیں جس میں وزیرِ داخلہ رانا ثناء اللّٰه، خواجہ آصف، ایاز صادق سمیت دیگر رہنماؤں کی آوازیں سنی جا سکتی ہیں۔

اپنے ٹوئٹر پیغام میں طلعت حسین کا کہنا تھا کہ شہباز شریف لیک سے پتا چلا کہ کہ پی ایم آفس مکمل طور پر بگڈ ہے ۔دوسرا پاکستان کے کسی وزیراعظم کی کوئ بات چیت محفوظ نہیں۔ تیسرا بگ کیا مواد لیک کرنے میں کوئ رکاوٹ یا ہچکچاہٹ نہیں صرف موقع کی مناسبت درکار ہے

ان کا مزید کہنا تھا کہ اس بگنگ کو روکنے والے تمام ادارے ناکام ہیں اور مزید لیکس ہوں گی۔

ایک اور ٹوئٹر پیغام میں طلعت حسین نے لکھا کہ شہباز حکومت آیڈیو لیکس تہلکہ خیز ہیں۔ وزیر اعظم کو دی گئی رپورٹ کے مطابق جاسوسی کے عمل میں دوسرے طریقوں کے علاوہ موبائل کے سپیکر کے ذریعے بات چیت سنی اور ریکارڈ کی گئی۔

انہوں مزید کہا کہ اگر یہ کسی فرد یا گروہ نے کیا ہے تو اس سے خطرناک اور کیا ہو گا۔ اور اگر اندر سے ہوا تو وہ اس سے بھی برا۔

غریدہ فاروقی کا اس پر کہنا تھا کہ وزیراعظم ہاؤس کی آڈیو لیکس انتہائی سنگین سیکورٹی مسئلہ ہے۔ اس کی فوری اور کڑی تفتیش لازم ہے اور حقیقت عوام کے سامنے لائی جانی چاہیے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ کن عناصر نے یہ کام کیا ہےاور اس کا مقصد کیا ہے۔ یہ مخصوص جاسوسی کب سے ممکن پائی ہے؛ کئی اھم سوالات ہیں جنکا براہِراست تعلق ملکی سلامتی سے ہے۔
Gashti ma kai bacho agur IK ki audio hoti to phir tum logo ki bakwas sunnay walai hooti tum logo ki kuss mai lan
 

3rd_Umpire

Chief Minister (5k+ posts)
اَپن بہت عرصے سے آپ لوگوں کو بتا رہا ہوں، کہ
کپتان نے ٹلّی کو لیا بھی اس لئے تھا، کہ ٹلّی کے پاس لوھار ٹبّر کے
رنگ برنگے سُتنھڑ کی گٹھڑیاں کی گٹھڑیاں پڑی ہوئی تھیں
ضرور سنتریوں، اور پھوجیوں میں بھی کپتان نے کچھ ایسے بندے رکھے ہوئے ہیں، جو
لوھاروں کے کچے اور جانگئیوں کو چُرانے کے دھندے میں ملوّث ہے

 

Lathi-Charge

Politcal Worker (100+ posts)
why would be somebody interested to know what the likes of ghareeda farooqi or talat Hussain has to say about the latest PMLN Leaks. these individuals are certainly not some shinning lights of journalism unless the idea is to keep them relevant. as for as the leaks are concerned, is anybody surprised?
 

wasiqjaved

Chief Minister (5k+ posts)
why would be somebody interested to know what the likes of ghareeda farooqi or talat Hussain has to say about the latest PMLN Leaks. these individuals are certainly not some shinning lights of journalism unless the idea is to keep them relevant. as for as the leaks are concerned, is anybody surprised?
siasat.pk waalon ko kaun samjhaye.
 
Sponsored Link