طوبیٰ اگر شوہر کے پاس واپس آنا چاہیں تو مجھے اعتراض نہیں:دانیہ شاہ

amir-liaqat-husain-daniasha.jpg


تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی اور معروف ٹی وی میزبان و اسکالر ڈاکٹر عامر لیاقت حسین کی تیسری بیوی سیدہ دانیہ شاہ نے عامر لیاقت کی دوسری بیوی طوبیٰ انور کے متعلق کہا ہے کہ اگر وہ اپنے شوہر کی زندگی میں واپس آنا چاہتی ہیں تو مجھے اعتراض نہیں۔ میں تو انہیں بڑی بہن سمجھوں گی۔

عامر لیاقت نے اپنی تیسری اہلیہ دانیہ شاہ کے ہمراہ ایک میگزین ایف ایچ ایم کو انٹرویو دیا جس میں انہوں نے کہا کہ طوبیٰ ابھی بھی میری بیوی ہے انہوں نے اپنے طور پر خلع کا دعویٰ دائر کیا ہے میں تو آج بھی ان کی عزت کرتا ہوں کبھی طوبیٰ کو برے الفاظ میں یاد نہیں کیا ان کے لیے گھر کے دروازے کھلے ہیں وہ جب جی چاہے آجائیں۔

ڈاکٹر عامر لیاقت نے کہا میں نے انہیں طلاق نہیں دی، انہوں نے خلع مانگی ہے اور خلع کے لیے دونوں فریقین کا رضامند ہونا ضروری ہے لیکن میں تو عدالت گیا ہی نہیں لہذا یہ خلع ہی کہلائے گی لیکن شرعی خلع نہیں ہوگی اور اگر طوبیٰ کہیں اور شادی کرتی ہیں تو وہ ناجائز شادی ہوجائے گی اور وہ زنا ہو گا۔


عامر لیاقت نے طوبیٰ انور کے لیے پیغام دیتے ہوئے کہا کہ طوبیٰ اپنی زندگی اچھے طریقے سے گزاریں، کہیں پر ملازمت کریں، کام کریں اگر میرے ساتھ نہیں رہنا چاہتیں تو نہ رہیں لیکن اسلام کے دائرے سے باہر نہ نکلیں۔ دانیہ میری زندگی میں ہے۔ طوبیٰ جب آنا چاہیں آجائیں لیکن اب دانیہ میری زندگی سے کہیں نہیں جائیں گی۔

میزبان نے دانیہ شاہ سے پوچھا آپ نے عامر لیاقت کو ایک اور شادی کرنے کی اجازت دی ہے لیکن جو لڑکی اپنے شوہر سے پیار کرتی ہے وہ تو نہیں چاہتی کہ اس کا شوہر مزید شادی کرے؟ اس سوال کے جواب میں دانیہ شاہ نے کہا جہاں میرے شوہر خوش ہوں گے وہاں میں خوش ہوں گی ان کی خوشی میں میری خوشی اور میری خوشی میں ان کی خوشی ہے۔

عامر لیاقت نے اپنی تیسری بیوی دانیہ شاہ کے شوبز میں آنے سے متعلق کہا کہ میں دانیہ کو شوبز میں ساتھ لے کر آؤں گا۔ میں دانیہ کو رمضان ٹرانسمیشن میں اپنے ساتھ لے کر آؤں گا۔ اس کے علاوہ میں اردو فلکس کے ساتھ کچھ ڈرامے کررہا ہوں تو ہوسکتا ہے کہ دانیہ کو ان ڈراموں میں ساتھ لے آؤں۔

انٹرویو کے دوران عامر لیاقت نے بتایا کہ وہ دانیہ کو ہنی مون پر تھائی لینڈ لے کر جائیں گے اور جب دانیہ سے پوچھا گیا کہ آپ کو کراچی کے لوگ کیسے لگے تو انہوں نے کہا کراچی کے لوگ تھوڑے سائیکو ہوتے ہیں۔

 
Advertisement

Bubber Shair

Chief Minister (5k+ posts)
واہ واہ ایک خنزیر نطفہ حرامی لعنتی کہہ رہا ہے کہ اگر اس کی سابقہ بیوی نے خلع لیا تو وہ اسلام سے خارج ہوجاے گی اور اس کا دوسرے شوہر سے نکاح بھی ناجائز ہوگا
اس خنزیر کو اسلامی شریعت کی غلط تشریح کرنے پر بھی عدالت میں بلوانا چاہئے اگلی بات جج اس کو خود سمجھا لے گا
یہ نطفہ حرام خنزیر اسلامی شریعت کی بالکل غلط تشریح کررہا ہے۔ عدالت میں رجسٹرڈ شادی سو فیصد جائز اور اسلامی شادی ہے کیونکہ اس میں گواہان کے علاوہ قاضی بطور ولی شامل سمجھا جاتا ہے اور نکاح فارم بھی وہی استعمال ہوتا ہے جو سارے پاکستانی مسلمان استعمال کرتے ہیں
ہر مذہب کی رسوم و رواج کے مطابق شادی اسلام میں بھی جائز سمجھی جاتی ہے اسلام اس بارے میں کوی اعتراض نہیں کرتا۔ مثلا جو یورپ جاکر چرچ یا عدالت میں شادی کرلیتے ہیں وہ بالکل جائز شادی ہوتی ہے اور ایسا کرنے والوں کو دماگ میں یہ نہیں بٹھانا چاہئے کہ وہ کوی حرام کام کررہے ہیں
اسی طرح اگر اس حرامی کی بیوی عدالت سے خلع لیتی ہے تو وہ جائز ہوگا اور اس کا تعلق اس گندے خنزیر سے ختم ہوجاے گا اور اس کے تین ماہ بعد وہ نکاح کرسکتی ہے
عامر لیاقت خنزیر نے تو پاکستان کے عدالتی نظام پر ہی حملہ کردیا ہے اس کو فوری نوٹس بھجوانا چاہئے
لگتا ہے اسے نئی بیوی سے کوی مسئلہ پیش آرہا ہے اور پرانی کو اب رکھنا چاہتا ہے
 
Sponsored Link