مریم نواز کی نئی مبینہ لیکڈآڈیو پر سوشل میڈیاپر تبصرے

maryam-audio11231.jpg


مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز ایک اورمبینہ آڈیو لیک ہوگئی ، جس میں وہ ایڈیٹرانچیف جیو اور جنگ میرشکیل الرحمان سے متعلق گفتگو کر رہی ہے۔

لیک ہونیوالی اس آڈیو میں سنا جاسکتاہے مریم نواز کہہ رہی ہیں کہ جیوسےخودبات کی توویسانہیں ہورہاتھا جیساہم چاہتےتھے، پھرمیں نےمیرشکیل صاحب سےذاتی طورپرخودبات کی۔

مریم کا آڈیو میں کہنا تھا کہ میں نے میر شکیل الرحمان سے کہا ہے کہ یہ زیادتی ہےآپ دونوں طرف کےفیکٹس دکھارہےہیں، عمران خان نے بغیر تصدیق جھوٹ بولا، اسی جھوٹ کوعمران خان نے نہ صرف دہرایا بلکہ دس باتیں اپنے پاس سے گھڑلیں۔


مبینہ آڈیو میں مریم نواز کہہ رہی ہیں کہ میں نے میرشکیل سے کہا کہ آپ کو یہ کرنا پڑے گا

مریم نواز کے مطابق میں نے میاں عامرسےبھی یہی کہا، میاں عامرنے کہا کہ دیکھیں میں کرتا کیا ہوں اس (عمران خان ) کے ساتھ، اللہ کا شکر ہے ہم نے اس کو آج جھوٹا ثابت کردیا۔

مریم نواز کی مبینہ لیکڈآڈیو پر وزیراطلاعات فرخ حبیب نے تبصرہ کرتے ہوئے لکھا کہ مریم صفدر آزادی صحافت پر کتنا یقین رکھتی ہے اس آڈیو سے معلوم ہو رہا ہے

اس پر ملیحہ ہاشمی نے تبصرہ کرتے ہوئے لکھا کہ وہ تمام صحافی جو نوازشریف کے ریاستی اداروں پر حملوں کی وجہ سےلگی پابندی ہٹوانےعدالت جا پہنچےتھے۔ انہیں مریم کی نئی آڈیو پر سانپ سونگھ گیا؟کیا میڈیا مالکان کو قومی خزانےسے نوازنے کے لالچ پر کرپشن کا دفاع کروانا "آزادی صحافت" ہے؟


اکبرنامی سوشل میڈیا صارف نے لکھا کہ رات کی مریم کی آڈیو آئی ہوئی لیکن آزادیِ صحافت والے سارے چپ ہیں کوئی شور شرابا نہیں کیا چکر ہے اتنا بھی کیا اگنور کرنا ؟


ایک سوشل میڈیا صارفی نے تبصرہ کیا کہ یہ سینئر صحافی اور بڑے بڑے اینکر مریم کی اول آڈیو پھر اس میں اضافے پر چپ تھے اب جب کہ میر شکیل اور میاں عامر کا نام مریم نے لے دیا تو اب بھی چپ ہیں۔ ان کی صحافت اور سوال کی عادت ن لیگ کے حق میں ہی جاگتی ہے۔ کوئی شرم کوئی حیا۔

لیاقت مغل نے تبصرہ کیا کہ کہا تھا صحافت نہیں بکاؤ مال ہے ۔اب مریم نواز کے آڈیو نے ثابت کر دیا کہ صحافت نہیں دھندہ ہے پہلے ہی عوام کو اس میڈیا پر یقین نہیں تھا اب بھی کوئی یقین نہیں ۔کیا میڈیا کے لوگ اپنی چوری پر بولیں گے؟


بابرنامی سوشل میڈیا صارف نے تبصرہ کیا کہ اک نواں کٹا کھل گیا مریم نواز کی ایک اور آڈیو لیک میر شکیل اور میاں عامر کو نوازنے کی

ایک اور سوشل میڈیا صارف نے تبصرہ کیا کہ مریم کی آڈیو لیک کا سب سے اچھا پہلو یہ ہے کہ وہ ڈائریکٹ مالکوں کو ڈکٹیٹ کر رہی ہے اور اب یہ چینل باقاعدہ مریم کی پیرول پر ہیں یہ بات سرٹیفائیڈ ہوگئی جس کے بعد اب ان کی کسی خبر کسی اسٹوری کی کوئی وقعت نہیں رہے گی۔بات لفافوں سے بہت آگے چلی گئی


فراز نے لکھا کہ موجودہ حالات میں مکافات عمل کی سب سے بڑی مثال مسلم لیگ ن کی آڈیو ویڈیو چال ہے دوسروں کی آڈیوز ویڈیوز لیک کرتے کرتے اب مریم نواز کی اپنی آڈیوز لیک ہونا شروع ہو گئی ہیں اور یہ آڈیوز ان کو کہیں کا نہیں چھوڑنے والی۔۔۔


آڈیو میں مریم نواز ،میر شکیل اور میاں عامر کا نام ایسے لے رہی ہے جیسے مالکن اپنے چپڑاسی کا نام لیتی ہے

راؤ بختیار کا کہنا تھا کہ ویڈیو سپیشلسٹ کے بعد پیش خدمت ہے آڈیو کوئین۔۔مریم نواز اپنا اور بکاؤ میڈیا کا کچھا چٹھا کھولتے ہوئے۔یہ چھانگا مانگا سے لے کر اب تک لوگوں کو اور میڈیا کو خرید کر اقتدار میں آتے رہے ہیں۔

 
Advertisement
Sponsored Link