نیب قوانین میں ترامیم سے آج کی حکومت نے اپنے گناہ معاف کرالیے،سپریم کورٹ

2nablawsupremecourt.jpg

سپریم کورٹ میں نیب ترامیم کیخلاف عمران خان کی درخواست پر سماعت ہوئی۔ سپریم کورٹ نے نیب ترامیم پر نیب سے تحریری جواب طلب کر لیا۔ چیف جسٹس نے کہا کہ نیب قانون میں بہت ساری ترامیم کی گئی ہیں، نیب قانون میں کی گئی ترامیم اچھی بھی ہیں۔

وکیل پی ٹی آئی خواجہ حارث نے کہا کہ موجودہ ترامیم آئینی مینڈیٹ کی خلاف ورزی ہے، عدالت آئینی ترمیم کو بنیادی آئینی ڈھانچے سے متصادم ہونے پر کالعدم کرسکتی ہے۔ جسٹس منصور علی شاہ نے پوچھا کہ آزاد عدلیہ آئین کے بنیادی ڈھانچہ میں شامل ہے، نیب ترامیم سے عدلیہ کا کونسا اختیار کم کیا گیا؟


جسٹس اعجاز الاحسن نے کہا کہ آپ کا موقف ہے نیب ترامیم سے احتساب کے اختیارات کو کم کردیا گیا، کیا احتساب پارلیمانی جمہوریت کا حصہ ہے۔ خواجہ حارث نے جواب دیا کہ گڈ گورننس کیلئے احتساب ضروری ہے، احتساب کے بغیر گڈ گورننس کا تصور نہیں ہو سکتا، نیب ترامیم سے زیر التواء مقدمات غیر موثر ہوگئے۔

جسٹس منصور علی شاہ نے کہا کہ آپ کچھ ترامیم کو ایک سطح تک لانے کا کہہ رہے ہیں ، کل حکومت نیب کو ہی ختم کردے تو کیا آپ نیب بنوانے کیلئے آئیں گے؟خواجہ حارث نے کہا کہ نیب ترامیم سے اختیارات کے ناجائز استعمال اور آمدن سے زائد اثاثوں کے کیسز ختم ہوچکے۔

چیف جسٹس نے کہا کہ کیا آمدن سے زائد اثاثوں کا کیس احتساب کیلئے ضروری ہے، چھوٹی چھوٹی ہاؤسنگ سوسائٹیز میں لوگ ایک دو پلاٹوں کے کیس میں گرفتار ہوئے۔

جسٹس منصور علی شاہ نے ریمارکس دیے کہ کوئی منصوبہ ناکام ہونے پر مجاز سرکاری افسران گرفتار ہوجاتے تھے، گرفتاریاں ہوتی رہیں تو کونسا افسر ملک کیلئے کوئی فیصلہ کرے گا، نیب ترامیم سے کوئی جرم بھی ختم نہیں ہوا اور فیصلہ سازی پر بھی گرفتاری نہیں ہو سکتی۔
 
Advertisement

thinking

Prime Minister (20k+ posts)
Tu judge sahib ap chahay tu in ke gunah maf karnay par muhar laga dein ya phir in ke gunah mein shareek na ho.Kiyo ke Qayamat ke din ap ne apna hasaab dena ha in choro ka nahi...Jo cases chal rehay hain un par NAB ko koi tarmeem asar andaz nahi honi chahay..Chahay ye log NAB khtam bhi kar dein.kiyo ke in tarameem se Gov m bethi parties aur leaders ko fayada ho raha ha.Jo tarmeem saheeh hain un ko adalat rehnay dein Jo insaaf ke taqazo se mutsadam hain unhay khtam karay.
 

Analysis2021

Voter (50+ posts)

ساجد میر، انس نورانی، عبداللہ چترالی ، سعد رضوی اور دیگر مولوی جو حکومت کے ہم نوا ہیں ان کو سپریم کورٹ میں بلایا جاے اور پوچھا جائے کہ یہ نیب میں ترمیم اسلامی ہے یا عیراسلامی۔​
 
Sponsored Link