وزیراعظم بارےانصار عباسی نے حامد میر اور سلیم صافی کی خبر کو جھوٹ قراردےدیا

8safirmirnrodawa.jpg

حامد میر نے ایک اور دعویٰ کر دیا، کہتے ہیں کسی کو این آر او نہ دینے والے وزیراعظم عمران خان خود اپوزیشن سے این آر او مانگ رہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق نجی نیوز چینل کی خصوصی ٹرانسمشن میں بات کرتے ہوئے سینئر صحافی حامد میر کا کہنا تھا کہ عمران خان خود بنی گالہ میں بیٹھے ہیں اور کابینہ کے لوگ ان سے رابطے میں ہیں۔

انہوں نے اپنی بات جاری رکھتے ہوئے کہا کہ اسپیکر کے ساتھ اپوزیشن رہنماؤں کی معاملات طے ہوگئَے تھے کہ افطار کے بعد ووٹنگ کرا دیں گے تاہم اس ضمن میں اسپیکر پر وزرا دباؤ ڈالا جا رہا ہےہے کہ افطار کے بعد ووٹنگ نہ کرائیں۔


حامد میر نے دعوی کیا کہ عمران خان اپوزیشن سے این آر او مانگ رہے ہیں ، حکومت کی جانب سے یہ کوشش کی جارہی ہے اسمبلی سیشن کے وقفے میں اپوزیشن کی کچھ اہم شخصیات کے ساتھ بات چیت کی جائے گی اور حکومت کے کچھ وزرا بات چیت کریں گے، جبکہ اس ضمن میں نیا حکم نامہ بھی سامنے آ گیا جس کے مطابق اپوزیشن کی اہم شخصیات سے گارنٹی لی جائے کہ اگر تحریک عدم اعتماد کامیاب ہوتی ہے اور کل نئی حکومت بنتی ہے تو عمران خان اور کابینہ اراکین کے خلاف نا ہی نیب مقدمات بنائےجائیں گے جبکہ گی اور نہ انہیں گرفتار کیا جائے گا ۔

انہوں نے مزید کہا کہ تاہم اپوزیشن شخصیات نے ایسے کسی سمجھوتے کیلئے رضامندی کا اظہار نہیں کیا، سپریم کورٹ کے حکم پر عمل کیا جائے۔

حامد میر کا کہنا تھاکہ گزشتہ رات کو بھی حکومت اور اپوزیشن رہنماؤں میں بات ہوئی تھی کہ شہباز شریف کے بجائے کسی چھوٹی پارٹی کے رہنما کو وزیراعظم بنا دیا جائے تو عمران خان کو اعتراض نہیں ہوگا۔

دوسری جانب سینئر اینکر پرسن اور صحافی سلیم صافی نے اپنے سوشل میڈیا اکاونٹ پر ٹوئٹ میں کہا کہ تکبر کا انجام:وزیراعظم،سپیکر اور کئی وزرا کے خلاف فائلیں بھری پڑی ہیں۔ خان عدم اعتماد پر ووٹنگ کےلئےتیار ہیں مگرگارنٹی مانگ رہے ہیں کہ انکے خلاف نیب اور آئین شکنی کے کیسز نہیں بنیں گے۔

سلیم صافی نے مزید کہا کہ گویا وہ این آر او مانگ رہے ہیں اورجسطرح وہ کسی کواین آر او نہیں دے سکتے تھےاسی طرح اپوزیشن انکو این آر او نہیں دے سکتی۔


دوسری جانب انصار عباسی نے حامد میر اور سلیم صافی کے دعوے کو جھوٹ قرار دے دیا ہے۔

 
Advertisement
Last edited by a moderator:

Tit4Tat

Minister (2k+ posts)
yes this report doing lot of rounds, will be the biggest surprising end of the innings, if true
 

The Sane

Chief Minister (5k+ posts)
8safirmirnrodawa.jpg

حامد میر نے ایک اور دعویٰ کر دیا، کہتے ہیں کسی کو این آر او نہ دینے والے وزیراعظم عمران خان خود اپوزیشن سے این آر او مانگ رہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق نجی نیوز چینل کی خصوصی ٹرانسمشن میں بات کرتے ہوئے سینئر صحافی حامد میر کا کہنا تھا کہ عمران خان خود بنی گالہ میں بیٹھے ہیں اور کابینہ کے لوگ ان سے رابطے میں ہیں۔

انہوں نے اپنی بات جاری رکھتے ہوئے کہا کہ اسپیکر کے ساتھ اپوزیشن رہنماؤں کی معاملات طے ہوگئَے تھے کہ افطار کے بعد ووٹنگ کرا دیں گے تاہم اس ضمن میں اسپیکر پر وزرا دباؤ ڈالا جا رہا ہےہے کہ افطار کے بعد ووٹنگ نہ کرائیں۔


حامد میر نے دعوی کیا کہ عمران خان اپوزیشن سے این آر او مانگ رہے ہیں ، حکومت کی جانب سے یہ کوشش کی جارہی ہے اسمبلی سیشن کے وقفے میں اپوزیشن کی کچھ اہم شخصیات کے ساتھ بات چیت کی جائے گی اور حکومت کے کچھ وزرا بات چیت کریں گے، جبکہ اس ضمن میں نیا حکم نامہ بھی سامنے آ گیا جس کے مطابق اپوزیشن کی اہم شخصیات سے گارنٹی لی جائے کہ اگر تحریک عدم اعتماد کامیاب ہوتی ہے اور کل نئی حکومت بنتی ہے تو عمران خان اور کابینہ اراکین کے خلاف نا ہی نیب مقدمات بنائےجائیں گے جبکہ گی اور نہ انہیں گرفتار کیا جائے گا ۔

انہوں نے مزید کہا کہ تاہم اپوزیشن شخصیات نے ایسے کسی سمجھوتے کیلئے رضامندی کا اظہار نہیں کیا، سپریم کورٹ کے حکم پر عمل کیا جائے۔

حامد میر کا کہنا تھاکہ گزشتہ رات کو بھی حکومت اور اپوزیشن رہنماؤں میں بات ہوئی تھی کہ شہباز شریف کے بجائے کسی چھوٹی پارٹی کے رہنما کو وزیراعظم بنا دیا جائے تو عمران خان کو اعتراض نہیں ہوگا۔

دوسری جانب سینئر اینکر پرسن اور صحافی سلیم صافی نے اپنے سوشل میڈیا اکاونٹ پر ٹوئٹ میں کہا کہ تکبر کا انجام:وزیراعظم،سپیکر اور کئی وزرا کے خلاف فائلیں بھری پڑی ہیں۔ خان عدم اعتماد پر ووٹنگ کےلئےتیار ہیں مگرگارنٹی مانگ رہے ہیں کہ انکے خلاف نیب اور آئین شکنی کے کیسز نہیں بنیں گے۔

سلیم صافی نے مزید کہا کہ گویا وہ این آر او مانگ رہے ہیں اورجسطرح وہ کسی کواین آر او نہیں دے سکتے تھےاسی طرح اپوزیشن انکو این آر او نہیں دے سکتی۔

این آر او ان دونوں کی بہن کا نام ہے
 

amber123

Chief Minister (5k+ posts)
حامد میر کو ہربندہ مرنے دے پہلے بتا کر جاتا ہے۔۔۔ یہ خبر اس لیے جھوٹ ہے کہ اس کے سارے کردار ذندہ ہیں۔۔
بے پرکی ہانکنیں کو صحا فت کہتے ہیں
 
Sponsored Link