If the Dogs are so loving, Why are they haraam in Islam?

Citizen X

President (40k+ posts)
Nahi nikal saktay, jaisay science mai ek scientists ki invention aaj tak mani jati hain issi tarha kuch sahaba kay baray mai koi doubt nahi keh inn say munsalik ahadees ghalat hoon gi , ab koi na manay to unki marzi.
First of all, rozana ke binah per jo kal hadith sahih thi aaj us ko dhaif ya mawdu karar dey diya jata hai, yeh koi nai baat nahi hai lekin phir aap Abu Huraira ke deen per chalnay per raazi hain to aap ki maarzi. But just glance over the following passages before you continue to be a follower of the religion of Abu Huraira.


Ibn Sa’ad in Tabaqat, Volume IV, page 90, Ibn Hajar Asqalani in Isaba, and Ibn Abd-e-Rabbih in Iqdu’l-Farid, Volume I, write that the Caliph said: “‘When I made you the governor of Bahrain, you had not even shoes on your feet, but now I have heard that you have purchased horses for 1,600 dinars. How did you acquire this wealth?’ He replied, ‘These were men’s gifts which profit has multiplied much.’ The Caliph’s face grew red with anger, and he lashed him so violently that his back bled. Then he ordered the 10,000 dinars which Abu Huraira had collected in Bahrain be taken from him and deposited in the account of the Baitu’-Mal.”

Ibn Abi’l-Hadid writes in his commentary on Nahju’l-Balagha, Volume I, page 360: “Abu Ja’far Asqalani has said: ‘According to our great men, Abu Huraira was a wicked fellow. The hadith narrated by him were not acceptable. Umar beat him with a lash and told him that he had changed hadith and had attributed false sayings to the Holy Prophet.'

” Ibn Asakir in his Ta’rikh Kabir and Muttaqi in his Kanzu’l-Umma report that Caliph Umar lashed him, rebuked him, and forbade him to narrate hadith from the Holy Prophet. Umar said: “Because you narrate hadith in large numbers from the Holy Prophet, you are fit only for attributing lies to him. (That is, one expects a wicked man like you to utter only lies about the Holy Prophet.) So you must stop narrating hadith from the Prophet; otherwise, I will send you to the land of Dus.” (A clan in Yemen, to which Abu Huraira belonged.)

Ibn Qutayba, in Ta’wil-e-Mukhtalifu’l-Hadith, and Hakim in Mustadrak, Volume III, and Dhahabi in Talkhisu’l-Mustadrak and Muslim in his Sahih, Volume II, reporting about the characteristics of Abu Huraira, all say that A’yesha repeatedly contradicted him and said, “Abu Huraira is a great liar who fabricates hadith and attributes them to the Holy Prophet.
 

Saboo

Prime Minister (20k+ posts)
ہم تو یہی سنتے آئے ہیں کہ تمام مسلمان آپس میں بھائی ہیں کوئی نئی تشریح آگئی ہے تو میں نہیں جانتا
یہ سب کہنے کی باتیں ہیں ….کیا آپ روزانہ نہیں دیکھتے بھائی بھائی کی کیسے
گاف مار رہا ہے….فرق صرف یہ ہے کہ اتنے پیار سے ...پتا دوسرے روز لگتا ہے. 😁
 

Saboo

Prime Minister (20k+ posts)
I agree with Ghamidi sahib on this as his explanation makes so much more logical sense.
The 2 things absolutely not allowed are alcohol and Khinzeer in a regular lifestyle.
From what I have gathered is that dogs can be kept as pets with restrictions as to how much they can interact with humans due to the nature of their utility to humans.
Nowadays dogs are used for drug detection, security, tracing humans, even for detecting certain cancers. How is this possible to be done if dogs are not allowed to be BOUGHT or SOLD and Trained??
Congratulations stargazer!…..You are making sense …….for a change. 😁
 

jani1

Chief Minister (5k+ posts)
Provide proof where it says a pig cannot be kept as a pet. You can't declare something haraam unless it you have real proof in hadith or quran.​

کتے اور خنزیر پالنے کا حکم​


سوال​



کتا اور خنزیر پالنا اسلام میں کیوں حرام ہے؟

جواب​



خنزیر ایک ناپاک اور نجس العین جانور ہے اوراس کے تمام اجزاءحرام ہیں، اسے پالنا اور اس کی خرید وفروخت کسی صورت جائز نہیں ہے۔ جب کہ کتے کا پالنابھی بلا ضرورت جائز نہیں ۔ کسی ضرورت (جیسے حفاظت، شکار)کے لیے جائز ہے۔ اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:
"لاتدخل الملائکة بیتًا فیه صورة ولا کلب". (البخاري، رقم: ۴۰۰۲، ۵/۱۸، بیروت) یعنی رحمت کے فرشتے ایسے گھر میں داخل نہیں ہوتے جس میں تصویر ہو یا کتا.
ترمذی شریف کی ایک حدیث میں ہے:
"من اتخذ کلبًا إلاّ کلب ماشیة أو صید أو زرع انتقص من أجره کل یوم قیراط". (الترمذي، رقم: ۱۴۹، باب ما جاء من أمسک کلباً الخ) یعنی جس شخص نے جانور اور کھیتی وغیرہ کی حفاظت یا شکار کے علاوہ کسی اور مقصد سے کتا پالا، اس کے ثواب میں ہرروز ایک قیراط کم ہوگا۔
ان دو حدیثوں سے معلوم ہوا کہ شکار اور حفاظتی اغراض کے علاوہ محض شوقیہ کتا پالنا شرعاً ممنوع ہے، جس گھر میں اس طرح کا کتا ہوگا اس میں رحمت کے فرشتے داخل نہ ہوں گے، یہ اللہ تعالیٰ کا حکم ہے جو اس کے پیغمبر محمد صلی اللہ علیہ وسلم سے قابلِ اعتماد ذریعہ سے ہم تک پہنچا ہے، ایک مؤمن کی شان یہ ہے کہ اس پر عمل کرے، اس حکم کی علت اور لِم کیا ہے اس کے درپے نہ ہو، اللہ تعالیٰ احکم الحاکمین ہے، احکام کی حقیقی علتیں اللہ ہی کو معلوم ہیں، مؤمن کی شان احکام پر عمل کرنا ہے۔
باقی علماء نے قرآن وحدیث اور شریعت کے مزاج کی روشنی میں کتے کے حرام ہونے اور اس کے ساتھ اختلاط کے عدمِ جواز کی شرعی مصلحتیں بھی بیان کی ہیں؛ لیکن ان مصلحتوں کو ”ظن“ کے درجے میں رکھنا چاہیے، واقعی مصلحت کیا ہے، اسے اللہ کے حوالے کرنا چاہیے۔
”احکامِ اسلام عقل کی نظر میں“ میں ہے:
’’کتا باعتبار اوصافِ مذمومہ کے شیطان ہوتا ہے، چناں چہ اس کو آں حضرت صلی اللہ علیہ وسلم نے شیطان فرمایا ہے ․․․․ وہ اوصافِ ذمیمہ یہ ہیں کہ جتنا کتا خبیث ترین وذلیل ترین وخسیس ترین حیوانات سے ہے اس کی محبت پیٹ سے آگے نہیں گزرتی، اس کی شدتِ حرص میں ایک بات یہ ہے کہ جب وہ چلتا ہے تو شدتِ حرص کی وجہ سے ناک زمین پر رکھ کر زمین سونگھتا جاتا ہے اور اپنے جسم کے سارے اعضاء چھوڑکر ہمیشہ اپنی دبر (پاخانہ کی جگہ) سونگھتا ہے، اور جب اس کی طرف پتھر پھینکو تو وہ فرطِ حرص وغصہ کی وجہ سے اس کو کاٹتا ہے، الغرض یہ جانور بڑا حریص وذلیل ودنی ہمت ہوتا ہے، گندے مردار کو بہ نسبت تازے گوشت کے زیادہ پسند کرتا اور نجاست بہ نست حلوا کے بڑی رغبت سے کھاتا ہے، اور جب کسی ایسے مردار پر پہنچے جو صدہا کتوں کے لیے کافی ہو تو شدتِ حرص وبخل کی وجہ سے اس مردار سے دوسرے کتے کو ذرہ برابر کھانے نہیں دیتا ․․․ پس جب کتے کے ایسے اوصافِ مذمومہ ہیں تو جو شخص اس کو کھاتا ہے وہ بھی ان ہی اوصاف سے متصل ہوتا ہے؛ لہٰذا یہ جانور حرام ٹھہرایا گیا، اور چوں کہ کتا پالنے میں اس کے ساتھ زیادہ تلبس ہوتا ہے جیسا کہ مشاہدہ ہے؛ اس لیے بلاخاص ضرورت کی صورتوں میں اس کا پالنا بھی ممنوع قرار دیا گیا کہ ان کی صفاتِ خبیثہ اس شخص میں اثر کریں گی اور چوں کہ ان صفاتِ خبیثہ سے ملائکہ کو نفرت ہے تو اس شخص سے ملائکہ بُعد اختیار کرتے ہیں، چناں چہ وہ ایسے گھر میں بھی نہیں آتے جہاں کتا ہوتا ہے، اور سیاست کے ملائکہ (انتظامِ عالم اسی طرح حفاظت اور عذاب وسزا والے فرشتے) اس سے مستثنیٰ ہیں‘‘۔ (احکامِ اسلام عقل کی نظر میں“ مولفہ حضرت تھانوی رحمہ اللہ ص: ۲۸۵، ۲۸۶، ط: مکتبہ دارالعلوم)
2-کتے سے متعلق شریعتِ مطہرہ کا حکم یہ ہے کہ جس کتے کو پالنا جائز ہو اس کی خرید و فروخت بھی جائز ہے اور جس کو پالنا جائز نہیں اس کی خرید و فروخت بھی جائز نہیں، اور کتے کو پالنے کی اجازت شکار کے لیے ہے یا گھر اور کھیتی کی حفاظت کے لیے ہے؛ لہذا جو کتا مذکورہ امور کے لیے استعمال کیا جا سکتا ہو اس کی خرید و فروخت جائز ہے ورنہ نہیں۔
کتوں کی حرمت کی وجہ کوئی پرانا واقعہ نہیں، بلکہ مذکورہ دلائل ہیں۔
الدر المختار وحاشية ابن عابدين (رد المحتار) (5/ 68):
’’لكن في الخانية: بيع الكلب المعلم عندنا جائز، وكذا السنور، وسباع الوحش والطير جائز معلماً أو غير معلم‘‘.
الفتاوى الهندية (3/ 114):
’’بيع الكلب المعلم عندنا جائز، وكذلك بيع السنور وسباع الوحش والطير جائز عندنا معلماً كان أو لم يكن، كذا في فتاوى قاضي خان‘‘.
الفتاوى الهندية (3/ 114):
’’وبيع الكلب غير المعلم يجوز إذا كان قابلاً للتعليم وإلا فلا، وهو الصحيح، كذا في جواهر الأخلاطي‘‘.فقط واللہ اعلم



فتوی نمبر : 144007200254
دارالافتاء : جامعہ علوم اسلامیہ علامہ محمد یوسف بنوری ٹاؤن


 

Saboo

Prime Minister (20k+ posts)
I am glad you have finally achieved the maturity status of understanding my thoughts.
Must feel good! Abb is main kiya!
Hahaha…Believe me it is not me but you who started making sense all of a sudden in whatever you say…..Even the patwaris can understand you now…….Ab is mien kia 😁
 

stargazer

Chief Minister (5k+ posts)
Hahaha…Believe me it is not me but you who started making sense all of a sudden in whatever you say…..Even the patwaris can understand you now…….Ab is mien kia 😁
When the Teacher starts making sense to the student it is an Aha moment! 😉
 

Saboo

Prime Minister (20k+ posts)
When the Teacher starts making sense to the student it is an Aha moment! 😉
Hahaha….Actually this is an Aha moment for both of them, the teacher as well as the student because prior to that the teacher was also a student learning the trick of the trade…….Ab is mien kia 🤣
 
Sponsored Link