براہ راست: وزیراعظم عمران خان کی ٹیلی فون پر عوام سے بات چیت

Raja Atta

MPA (400+ posts)



سلام آباد : وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ ہماری حکومت نیب میں کوئی مداخلت نہیں کرتی کیونکہ ہم قانون کی بالادستی چاہتے ہیں، طاقتور کو قانون کے نیچے لانے کو میں جہاد سمجھتاہوں۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے عوام سے براہ راست گفتگو کرتے ہوئے کہا کوروناکی پہلی اور دوسری لہر میں قوم نے پوری طرح تعاون کیا، پاکستان خوش قسمت ہے جو اچھی طریقے سے پہلی ،دوسری لہر سے نکلا،اللہ کا کرم ہے کہ ہم نے دونوں طرف سے لوگوں کو بچایا۔

بھارت میں کورونا صورتحال کے حوالے سے وزیراعظم کا کہنا تھا کہ 22کروڑ لوگ بھارت میں غربت کی لکیر سے نیچے گئے ،بھارت کے حالات تیسری لہر میں سب کے سامنے ہیں ، بھارت کے اسپتالوں کی حالت دیکھ کر افسوس ہوتا ہے ، وہاں لوگ سڑکوں پرمررہےہیں،اسپتالوں میں آکسیجن کی کمی کاسامناہے۔

عمران خان نے کہا کہ بنگلا دیش ، نیپال میں بھی کوروناکے کیسز بڑھ رہےہیں، عوام سے گزارش ہے عید کی چھٹیوں میں اپنے بڑوں کا خیال رکھیں ، جتنا ہم احتیاط کریں گے ہم اس عذاب سے نکل جائیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ پمزکےڈاکٹرزنے بتایاکوروناکے کیسز اب تیزی سے اوپر نہیں جارہے، سب سے اہم ایس اوپیز ماسک کا استعمال ہے ، عوام عید کی چھٹیوں میں ضرور ماسک پہنیں اور ایس اوپیز پرعمل کرکے عوام اپنے پیاروں اور قوم کو بچائیں ، عوام اپنے آپ کو بچائیں تاکہ ہمیں لاک ڈاؤن نہ کرناپڑے، ایس اوپیزپرعمل کرینگے توانشااللہ تیسری لہرسے بھی نکل جائیں گے۔

طاقت کی حکمرانی سے متعلق سوال کے جواب میں عمران خان نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف 25سال پہلے بنائی تھی ، میرے پاس اتنا پیسہ تھا کہ کچھ نہ کرتا تو زندگی گزار سکتا تھا، پاکستان میری عمر سے تقریباً5سال بڑاہے، دنیا کی تاریخ میں جو قوم اوپر گئی وہ قانون کی بالادستی لیکر آئی تھی۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ ایک انسانی قانون ہے اوردوسرا جانوروں کاقانون ہے ، انسانی معاشرے میں قانون کامطلب ہے کمزورکو طاقتورسےتحفظ دینا، ریاست مدینہ کی بات کروں تو سمجھتے ہیں سوئچ آن ہوگیا دودھ کی نہریں بہنے لگیں۔

انھوں نے مزید کہا کہ قوم تباہ تب ہوتی ہے جب انصاف دینے کی اخلاقی جرات ختم ہو جائے، جو سائیکل بھینس چوری کرتاہے اس سے ملک تباہ نہیں ہوتے ، ملک تباہ تب ہوتاہے جب حکمران پیسہ لوٹ کرباہربھجواتے ہیں ، ہر غریب ملک کا مسئلہ ہے جہاں طاقتور پیسہ چرا کر باہر لےجاتے ہیں، یک ہزار ارب ڈالر غریب ملکوں سے ہرسال چوری ہوکر باہرجاتاہے، غریب ملک مقروض اور امیر امیر ہوتے جارہے ہیں۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ جسٹس منیر کے فیصلے سے قانون کی حکمرانی ے بجائے طاقت کی حکمرانی آئی، نوازشریف نے ڈنڈوں سے سپریم کورٹ پر حملہ کیا ، جج سجاد علی شاہ جان بچاکر بھاگا، چیف جسٹس کو باہر نکالنے کےلئے باقی ججز کو پیسے دیئے گئے ، جنرل پرویزمشرف نے چیف جسٹس کو باہرنکالا۔

وزیراعظم نے کہا کہ میں وہ لیڈر تھا جسے جیل میں ڈالا گیا باقی دو لیڈر تو باہر بھاگ گئے تھے ، ہماری حکومت نیب میں کوئی مداخلت نہیں کرتی کیونکہ ہم قانون کی بالادستی چاہتے ہیں، طاقتور کو قانون کے نیچے لانے کو میں جہاد سمجھتاہوں۔

ان کا کہنا تھا کہ مافیازکامطلب ہے یہ وہ لوگ ہیں جوکرپٹ نظام سے فائدہ اٹھارہاہے ، یہ جو مافیا بیٹھا ہے وہ نہیں چاہےگاکہ ملک میں قانون کی بالادستی ہو، شوگرمافیا بھی نہیں چاہے گا، ادارے کام کرے یہ بھی کرپٹ نظام سے فائدہ اٹھا رہے ہیں۔

عمران خان نے مزید کہا کہ انصاف کی جدوجہد لڑنے کیلئےتحریک انصاف بنائی تھی ، ہم کامیاب ہورہے ہیں ، اسٹیٹس کو اور مافیاز سے لڑرہےہیں ، قوم نےمیرے ساتھ کھڑے ہونا ہے ،اللہ نے مجھے لڑنے کی ٹریننگ دی ہے ، میں ان مافیاز سے لڑ کر اور جیت کر دکھاؤں گا۔

ایک سوال کے جواب میں وزیراعظم کا کہنا تھا کہ مغربی ممالک کو چین کی تیز رفتاری سے خوف ہے ، مغربی ممالک نے بھارت کو مضبوط طاقت بنانے کا فیصلہ کیا ہے، ہندوستان چین کیخلاف کھڑا ہوا تو یہ احمقانہ ہوگاکیونکہ اپنی تباہی کرےگا، مغربی ممالک کو خوف ہے کہ چین ان سے آگے نکل جائے گا۔

انھوں نے مزید کہا کہ مقبوضہ کشمیر کے حوالےسے دنیا میں شعور پیدا کرنے کی کوشش کی ہے ، بدقسمتی سے مغربی ممالک کشمیریوں کیساتھ اس طرح نہیں کھڑا جتنا ظلم ہورہاہے، جب تک 5 اگست کی صورتحال واپس نہیں ہوتی بھارت سے کوئی بات چیت نہیں ہوگی۔

Source
 
Advertisement
Last edited:

Baadshaah

Politcal Worker (100+ posts)
I think this telethon is planted, No genuine caller or critical caller can be seen in this conversation..
 

Mughal1

Chief Minister (5k+ posts)
asal main baat sirf qanoon ki balaa dasti ki nahin hai balkeh saheeh aaino qanoon ki balaa dasti ki baat hai. dastoor is liye banaaya jaata hai taa keh logoon ko organise kiya jaa sake kuchh aghrazo maqaasid ke liye aur qanoon is liye banaaya jaata hai taa keh logoon ko aain ke mutaabiq regulate kiya jaa sake. agar aain aur us ke mutaabiq qawaneen na hun to phir logoon ki zindagi ka koi maqsad hi nahin hota jis ke liye un ko tayaar kiye jaaye.

ye baat aain teh kerta hai keh logoon ki zindagi ke maqaasid kia hone chahiyen ya un ki ehmiyati terteeb kia honi chahiye. aain hi logoon ki tadaad ya abaadi ko rishtun main baandata hai aur un ke rehne ki jaga ko mutaiyan kerta hai. aain ke baghair kisi ka kisi se koi rishta ho hi nahin sakta. yahee wajah hai insaanu aur jaanwarun main farq aain kerta hai. issi liye aain hi logoon ke liye faraaiz ka taayun kerta hai aur haqooq ka bhi.

lihaaza aain ki ehmiyat ko achhi tarah se samjho warna aap aik jaanwar ke siwaa kuchh bhi nahin ho. issi tarah qanoon logoon ko bataata hai keh woh aain ke mutaabiq khud ko kaise chalaayen taa keh insaani abaadi main koi problems na hun aik doosre ke haathun. khudaa ne ye duniya banayee hai aur ye aik ghar ki maanind hai. is ghar main jitne log bhi rehte hen agar woh khud ko achhe tareeqe se organise aur regulate na karen ge to aapas main her baat per ladte aur jhagardte rahen ge.

lihaaza her woh shakhs jo aaino qanoon ki ehmiyat ko theek tarah se samajhne ki koshish hi nahin kerta woh bahot badaa jahil hota hai. yahee nahin balkeh jo aik achhe aain aur qanoon ki jaan boojh ker khilaaf warzi kerta hai woh bahot hi badaa haraami shakhs hota hai. issi liye us ko sazaa dena laazmi hota hai taa keh aise logoon ko society main tabahi aur barbaadi phelaane se roka jaa sake. yahee wajah hai aaino qanoon se kisi ko bhi baalatar nahin samjhaa jaa sakta.

yahee wajah hai jo shakhs khud ko aaino qanoon se baalatar samjhe us ke haraami hone main bilkul hi shak nahin kiya jaa sakta. aur to aur khud khudaa ki zaat aaino qanon ke taabe hai yaani jo aaino qanoon khud us ne banaaye hen woh unhi ke ain mutaabiq chalta hai. issi liye ye samajhna keh khuda jab chahe jo chahe ker sakta hai aik ghalat aqeeda hai. khudaa ka bhi ye duniya banaane ka koi maqsad hai issi liye woh jo bhi kare ga us maqsad hi ke ain mutaabiq kare ga ta keh woh maqsad poora ho, warna ya to woh apni kare ga kisi moodi bache ki tarah ya apna maqsad poora kare ga aik hikmat bhari hasti ki tarah aur zahir hai khudaa bewaqoof to ho hi nahin sakta.

agar mullaan haraami na hote to log deene islam se her giz door na jaate apni jahaalat ki wajah se. issi liye agar log riyaasate madina banaana chahte hen to un ko quraan ko theek tarah se samjhe baghair chaara hi nahin hai keh quraan ko theek tarah se samjhe baghair riyaaste madina ban hi nahin sakti. agar ban sakti to nazoole quraan ka koi maqsad hi na hota. For better understanding of deen of islam from the quran see HERE, HERE, HERE and HERE.
 
Last edited:

Amal

Chief Minister (5k+ posts)
 
Sponsored Link

Featured Discussion Latest Blogs اردوخبریں