توشہ خانہ اور ممنوعہ فنڈنگ پر عمران خان کا ن لیگ اور پی پی کوچیلنج

im1n111h1h.jpg


توشہ خانہ سے لیے گئے تحائف کی تمام تفصیلات ظاہر کی جائیں تو میرا دعویٰ ہے کہ سابق حکمرانوں میں سے کسی نے اگر قانون کے مطابق کام کیا ہے تو وہ میں ہوں۔

تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی چینل بول ٹی وی پر ممنوعہ فنڈنگ اور توشہ خانہ کیس کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے سابق وزیراعظم و چیئرمین پاکستان تحریک انصاف نے کہا کہ توشہ خانہ سے لیے گئے تحائف کی تمام تفصیلات ظاہر کی جائیں تو میرا دعویٰ ہے کہ سابق حکمرانوں میں سے کسی نے اگر قانون کے مطابق کام کیا ہے تو وہ میں ہوں۔

عمران خان نے کہا کہ میں چیلنج کرتا ہوں کہ مسلم لیگ ن، پاکستان پیپلزپارٹی اور جے یو آئی (ف) کے اکائونٹس دیکھ لیں اور پاکستان تحریک انصاف کے اکائونٹس سے موازنہ کر لیں، پاکستان کی تاریخ میں سیاسی فنڈریزنگ کے حوالے سے پاکستان تحریک انصاف کے علاوہ کسی کے پاس ایسا شفاف نظام نہیں ہے۔

انہوں نے کہا کہ جو بھی سابق حکومتیں ہیں ان کا بھی توشہ خانہ کے حوالہ سے ریکارڈ منظرعام پر لایا جائے تو میرا دعویٰ ہے کہ کسی نے اگر قانون کے مطابق کام کیا ہے تو وہ میں ہوں۔

سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری بیان میں سابق وزیراعظم نے کہا کہ غیر ملکی سازش سے مسلط کی گئی امپورٹڈ حکومت بلدیاتی انتخابات میں شکست کے بعد عوامی قبولیت حاصل کرنے کے لیے میڈیا اور عوام میں خوف اور دہشت کا سہارا لے رہی ہے تاہم یہ صرف ملک کو مزید غیر مستحکم کرنے میں کامیاب ہو رہے ہیں۔ واحد حل شفاف اور آزاد انتخابات ہیں۔

انہوں نے شہباز گل کے اسسٹنٹ اظہار کی اہلیہ کو گرفتار کرنے کی بھی مذمت کی۔

اس سے قبل ممنوعہ فنڈنگ کے حوالے سے عمران خان نے ٹویٹ کرتے ہوئے لکھا تھا کہ پوری ریاستی مشینری اور الیکشن کمیشن کی شرانگیزیوں کے باوجود پنجاب کےضمنی انتخابات میں نون لیگ کی شکست کےبعد چیف الیکشن کمشنر اور الیکشن کمیشن آف پاکستان نے امپورٹڈ حکومت کے ساتھ مل کر تحریک انصاف کیخلاف ٹیکنیکل ناک آؤٹ کی سازش رچائی ہے۔ اب عام انتخابات میں پوری پی ڈی ایم کےاسی انجام کے امکانات نے انہیں خوف میں مبتلا کررکھا ہے۔
 
Sponsored Link