جتنی سکیورٹی بریچ عمران خان نےکی پاکستان کابدترین دشمن بھی نہیں کرسکتا،مریم

12maryamkhan%20badrareyescb.jpg

فارن فنڈڈ شیطانی دماغ کا مالک عمران خان پاکستان کا بدترین دشمن ہے، جو کچھ اس نے وزیراعظم کے دفتر میں بیٹھ کر کیا کوئی ملک دشمن بھی نہیں کر سکتا۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم آفس کی آڈیو لیک سامنے آنے کے بعد پاکستان تحریک انصاف کی آڈیو لیکس ہونے کا سلسلہ جاری ہے۔ آج بھی سابق وزیراعظم وچیئرمین پاکستان تحریک انصاف اور ان کی ٹیم کی مبینہ طور پر گفتگو کی آڈیو ’سائفر کی سازشی کہانی پارٹ ٹو‘ کے نام سے سامنے آئی ہے۔

سینئر صحافی حسن ایوب خان نے وزیراعظم آفس کی آڈیو لیک ہونے کے بعد ایک جلسہ عام سے سابق وزیراعظم عمران خان کے خطاب کی ویڈیو سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹویٹر پر شیئر کرتے ہوئے اپنے پیغام میں لکھا کہ: عمران احمد نیازی غصے میں دیکھائی دے رہے ہیں کہتے ہیں کہ میں نیوٹرلز سے پوچھتا ہوں کہ وزیراعظم آفس کی آڈیو لیکس کا کون ذمہ دار ہے؟

جلسہ عام سے خطاب میں عمران خان کہہ رہے تھے کہہ: وزیراعظم آفس کی سکیورٹی بریچ ہوئی ہے تو اس کا مطلب ہے کہ ہمارے دشمنوں کے پاس ہماری حساس معلومات موجود ہیں اس کا ذمہ دار کون ہے؟

عمران خان کے خطاب اور آج ہونے والی آڈیو لیک کے ردعمل میں نائب صدر مسلم لیگ ن مریم نوازشریف نے اپنے ٹویٹر پیغام میں لکھا کہ: جتنی بڑی وسنگین سیکیورٹی بریچ تم نے وزیرِ اعظم کے دفتر میں بیٹھ کر اپنے سیکرٹری اور حواریوں کے ساتھ مل کر کی ہے اس کا مقابلہ کوئی پاکستان کا بدترین دشمن بھی نہیں کر سکتا۔ سوچو ایک فارن فنڈڈ شیطانی دماغ 4 سال ملک کی تقدیر سے کھیلتا رہا اور انتہائی ڈھٹائی سے آج بھی وہی کر رہا ہے!


’سائفر کی سازشی کہانی پارٹ ٹو‘ کے نام سے آج جاری ہونے والی آڈیو لیک میں عمران خان شاہ محمود قریشی کو کہہ رہے ہیں کہ شاہ جی کل ہم تینوں نے ایک میٹنگ کرنی ہے (عمران خان، اعظم خان، شاہ محمود قریشی) ، میٹنگ میں یہ کہنا ہے کہ وہ جو لیٹر ہے اس کے مرضی کے منٹس لکھ دے، اعظم خان کہہ رہا ہے کہ اس کے منٹس بنالیتے ہیں اور فوٹو سٹیٹ کرکے رکھ لیتے ہیں۔ اعظم خان نے کہا کہ لیٹر 8 تاریخ کو آیا جس پر عمران خان نے کہا کہ یہ میٹنگ 7 تاریخ کو ہوئی، ہم نے امریکیوں کا نام نہیں لینا ، پلیز کسی کے منہ سے ملک کا نام نہ نکلے۔

اسد عمر نے کہا کہ آپ جان کر اسے لیٹر کہہ رہے ہیں؟ یہ لیٹر نہیں ہے بلکہ میٹنگ کی ٹرانسکرپٹ ہے، اس پر عمران خان نے کہا یہ میٹنگ کی ٹرانسکرپٹ ہے اور ٹرانسکرپٹ یا لیٹر ایک ہی چیز ہے، لوگوں کو ٹرانسکرپٹ کا نہیں معلوم عوامی جلسوں میں ایسے ہی کہا جاتا ہے!
 

arifkarim

Prime Minister (20k+ posts)
12maryamkhan%20badrareyescb.jpg

فارن فنڈڈ شیطانی دماغ کا مالک عمران خان پاکستان کا بدترین دشمن ہے، جو کچھ اس نے وزیراعظم کے دفتر میں بیٹھ کر کیا کوئی ملک دشمن بھی نہیں کر سکتا۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم آفس کی آڈیو لیک سامنے آنے کے بعد پاکستان تحریک انصاف کی آڈیو لیکس ہونے کا سلسلہ جاری ہے۔ آج بھی سابق وزیراعظم وچیئرمین پاکستان تحریک انصاف اور ان کی ٹیم کی مبینہ طور پر گفتگو کی آڈیو ’سائفر کی سازشی کہانی پارٹ ٹو‘ کے نام سے سامنے آئی ہے۔

سینئر صحافی حسن ایوب خان نے وزیراعظم آفس کی آڈیو لیک ہونے کے بعد ایک جلسہ عام سے سابق وزیراعظم عمران خان کے خطاب کی ویڈیو سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹویٹر پر شیئر کرتے ہوئے اپنے پیغام میں لکھا کہ: عمران احمد نیازی غصے میں دیکھائی دے رہے ہیں کہتے ہیں کہ میں نیوٹرلز سے پوچھتا ہوں کہ وزیراعظم آفس کی آڈیو لیکس کا کون ذمہ دار ہے؟

جلسہ عام سے خطاب میں عمران خان کہہ رہے تھے کہہ: وزیراعظم آفس کی سکیورٹی بریچ ہوئی ہے تو اس کا مطلب ہے کہ ہمارے دشمنوں کے پاس ہماری حساس معلومات موجود ہیں اس کا ذمہ دار کون ہے؟

عمران خان کے خطاب اور آج ہونے والی آڈیو لیک کے ردعمل میں نائب صدر مسلم لیگ ن مریم نوازشریف نے اپنے ٹویٹر پیغام میں لکھا کہ: جتنی بڑی وسنگین سیکیورٹی بریچ تم نے وزیرِ اعظم کے دفتر میں بیٹھ کر اپنے سیکرٹری اور حواریوں کے ساتھ مل کر کی ہے اس کا مقابلہ کوئی پاکستان کا بدترین دشمن بھی نہیں کر سکتا۔ سوچو ایک فارن فنڈڈ شیطانی دماغ 4 سال ملک کی تقدیر سے کھیلتا رہا اور انتہائی ڈھٹائی سے آج بھی وہی کر رہا ہے!


’سائفر کی سازشی کہانی پارٹ ٹو‘ کے نام سے آج جاری ہونے والی آڈیو لیک میں عمران خان شاہ محمود قریشی کو کہہ رہے ہیں کہ شاہ جی کل ہم تینوں نے ایک میٹنگ کرنی ہے (عمران خان، اعظم خان، شاہ محمود قریشی) ، میٹنگ میں یہ کہنا ہے کہ وہ جو لیٹر ہے اس کے مرضی کے منٹس لکھ دے، اعظم خان کہہ رہا ہے کہ اس کے منٹس بنالیتے ہیں اور فوٹو سٹیٹ کرکے رکھ لیتے ہیں۔ اعظم خان نے کہا کہ لیٹر 8 تاریخ کو آیا جس پر عمران خان نے کہا کہ یہ میٹنگ 7 تاریخ کو ہوئی، ہم نے امریکیوں کا نام نہیں لینا ، پلیز کسی کے منہ سے ملک کا نام نہ نکلے۔

اسد عمر نے کہا کہ آپ جان کر اسے لیٹر کہہ رہے ہیں؟ یہ لیٹر نہیں ہے بلکہ میٹنگ کی ٹرانسکرپٹ ہے، اس پر عمران خان نے کہا یہ میٹنگ کی ٹرانسکرپٹ ہے اور ٹرانسکرپٹ یا لیٹر ایک ہی چیز ہے، لوگوں کو ٹرانسکرپٹ کا نہیں معلوم عوامی جلسوں میں ایسے ہی کہا جاتا ہے!
کنجری گشتی گیراجن
 

thinking

Prime Minister (20k+ posts)
12maryamkhan%20badrareyescb.jpg

فارن فنڈڈ شیطانی دماغ کا مالک عمران خان پاکستان کا بدترین دشمن ہے، جو کچھ اس نے وزیراعظم کے دفتر میں بیٹھ کر کیا کوئی ملک دشمن بھی نہیں کر سکتا۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم آفس کی آڈیو لیک سامنے آنے کے بعد پاکستان تحریک انصاف کی آڈیو لیکس ہونے کا سلسلہ جاری ہے۔ آج بھی سابق وزیراعظم وچیئرمین پاکستان تحریک انصاف اور ان کی ٹیم کی مبینہ طور پر گفتگو کی آڈیو ’سائفر کی سازشی کہانی پارٹ ٹو‘ کے نام سے سامنے آئی ہے۔

سینئر صحافی حسن ایوب خان نے وزیراعظم آفس کی آڈیو لیک ہونے کے بعد ایک جلسہ عام سے سابق وزیراعظم عمران خان کے خطاب کی ویڈیو سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹویٹر پر شیئر کرتے ہوئے اپنے پیغام میں لکھا کہ: عمران احمد نیازی غصے میں دیکھائی دے رہے ہیں کہتے ہیں کہ میں نیوٹرلز سے پوچھتا ہوں کہ وزیراعظم آفس کی آڈیو لیکس کا کون ذمہ دار ہے؟

جلسہ عام سے خطاب میں عمران خان کہہ رہے تھے کہہ: وزیراعظم آفس کی سکیورٹی بریچ ہوئی ہے تو اس کا مطلب ہے کہ ہمارے دشمنوں کے پاس ہماری حساس معلومات موجود ہیں اس کا ذمہ دار کون ہے؟

عمران خان کے خطاب اور آج ہونے والی آڈیو لیک کے ردعمل میں نائب صدر مسلم لیگ ن مریم نوازشریف نے اپنے ٹویٹر پیغام میں لکھا کہ: جتنی بڑی وسنگین سیکیورٹی بریچ تم نے وزیرِ اعظم کے دفتر میں بیٹھ کر اپنے سیکرٹری اور حواریوں کے ساتھ مل کر کی ہے اس کا مقابلہ کوئی پاکستان کا بدترین دشمن بھی نہیں کر سکتا۔ سوچو ایک فارن فنڈڈ شیطانی دماغ 4 سال ملک کی تقدیر سے کھیلتا رہا اور انتہائی ڈھٹائی سے آج بھی وہی کر رہا ہے!


’سائفر کی سازشی کہانی پارٹ ٹو‘ کے نام سے آج جاری ہونے والی آڈیو لیک میں عمران خان شاہ محمود قریشی کو کہہ رہے ہیں کہ شاہ جی کل ہم تینوں نے ایک میٹنگ کرنی ہے (عمران خان، اعظم خان، شاہ محمود قریشی) ، میٹنگ میں یہ کہنا ہے کہ وہ جو لیٹر ہے اس کے مرضی کے منٹس لکھ دے، اعظم خان کہہ رہا ہے کہ اس کے منٹس بنالیتے ہیں اور فوٹو سٹیٹ کرکے رکھ لیتے ہیں۔ اعظم خان نے کہا کہ لیٹر 8 تاریخ کو آیا جس پر عمران خان نے کہا کہ یہ میٹنگ 7 تاریخ کو ہوئی، ہم نے امریکیوں کا نام نہیں لینا ، پلیز کسی کے منہ سے ملک کا نام نہ نکلے۔

اسد عمر نے کہا کہ آپ جان کر اسے لیٹر کہہ رہے ہیں؟ یہ لیٹر نہیں ہے بلکہ میٹنگ کی ٹرانسکرپٹ ہے، اس پر عمران خان نے کہا یہ میٹنگ کی ٹرانسکرپٹ ہے اور ٹرانسکرپٹ یا لیٹر ایک ہی چیز ہے، لوگوں کو ٹرانسکرپٹ کا نہیں معلوم عوامی جلسوں میں ایسے ہی کہا جاتا ہے!
Waisay is bibi ke lia aik mashwra ha.
agar bura na manay..har mard o aurat ki kuch fitri needs hoti hain.jin ko pora karnay se mind fresh ho jata ha..depression. anger bhi control rehta ha..She should try to fulfill these genuine needs..warna mujhay lagta ha ye bibi kaheen kisi zehani maraz ka shikar na ho jaya..
 

Lubnakhan

Minister (2k+ posts)
اس نے جھوٹ بولا کہ تم کوئی سائفر یا خط نہیں تھا، اب وہ دعویٰ کر رہی ہے کہ ایک سائفر تھا اور عمران خان کو لوگوں کو اعتماد میں نہیں لینا چاہیے تھا، انہیں سائفر کی بات نہیں کرنی چاہیے تھی، وہ سمجھتی ہے کہ یہ سیکیورٹی کی خلاف ورزی ہے، اس لیے وہ ایک غیر ملکی کمانڈ کے وجود کو تسلیم کر رہی ہے جس پر پی ڈی ایم اور اسٹیبلشمنٹ نے خان کو ہٹانے کے لیے مل کر کام کیا۔ چونکہ اس کا تعلق امریکہ سے ہے اس لیے مریم نواز چیخ رہی ہیں کیونکہ ہم جانتے ہیں کہ وہ غلام ہیں۔
 

taban

Chief Minister (5k+ posts)
جیسے گیراج کا استعمال نانی چار سو بیس اور اسکی والدہ نے کیا تھا ایسا پاکستان میں کوئی شخص بھی نہیں کر سکتا رانا ثناء راوی ہے
 

Uxi.Ali

Politcal Worker (100+ posts)
Yo Mr. Nasir Butt... the write/blogger.. are you deaf or something?? Iss puri audio main MARZI K MINUTES LIKH DAIN kahan bola gya hai??

Thori aqal use karain
 

NCP123

Minister (2k+ posts)
12maryamkhan%20badrareyescb.jpg

فارن فنڈڈ شیطانی دماغ کا مالک عمران خان پاکستان کا بدترین دشمن ہے، جو کچھ اس نے وزیراعظم کے دفتر میں بیٹھ کر کیا کوئی ملک دشمن بھی نہیں کر سکتا۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم آفس کی آڈیو لیک سامنے آنے کے بعد پاکستان تحریک انصاف کی آڈیو لیکس ہونے کا سلسلہ جاری ہے۔ آج بھی سابق وزیراعظم وچیئرمین پاکستان تحریک انصاف اور ان کی ٹیم کی مبینہ طور پر گفتگو کی آڈیو ’سائفر کی سازشی کہانی پارٹ ٹو‘ کے نام سے سامنے آئی ہے۔

سینئر صحافی حسن ایوب خان نے وزیراعظم آفس کی آڈیو لیک ہونے کے بعد ایک جلسہ عام سے سابق وزیراعظم عمران خان کے خطاب کی ویڈیو سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹویٹر پر شیئر کرتے ہوئے اپنے پیغام میں لکھا کہ: عمران احمد نیازی غصے میں دیکھائی دے رہے ہیں کہتے ہیں کہ میں نیوٹرلز سے پوچھتا ہوں کہ وزیراعظم آفس کی آڈیو لیکس کا کون ذمہ دار ہے؟

جلسہ عام سے خطاب میں عمران خان کہہ رہے تھے کہہ: وزیراعظم آفس کی سکیورٹی بریچ ہوئی ہے تو اس کا مطلب ہے کہ ہمارے دشمنوں کے پاس ہماری حساس معلومات موجود ہیں اس کا ذمہ دار کون ہے؟

عمران خان کے خطاب اور آج ہونے والی آڈیو لیک کے ردعمل میں نائب صدر مسلم لیگ ن مریم نوازشریف نے اپنے ٹویٹر پیغام میں لکھا کہ: جتنی بڑی وسنگین سیکیورٹی بریچ تم نے وزیرِ اعظم کے دفتر میں بیٹھ کر اپنے سیکرٹری اور حواریوں کے ساتھ مل کر کی ہے اس کا مقابلہ کوئی پاکستان کا بدترین دشمن بھی نہیں کر سکتا۔ سوچو ایک فارن فنڈڈ شیطانی دماغ 4 سال ملک کی تقدیر سے کھیلتا رہا اور انتہائی ڈھٹائی سے آج بھی وہی کر رہا ہے!


’سائفر کی سازشی کہانی پارٹ ٹو‘ کے نام سے آج جاری ہونے والی آڈیو لیک میں عمران خان شاہ محمود قریشی کو کہہ رہے ہیں کہ شاہ جی کل ہم تینوں نے ایک میٹنگ کرنی ہے (عمران خان، اعظم خان، شاہ محمود قریشی) ، میٹنگ میں یہ کہنا ہے کہ وہ جو لیٹر ہے اس کے مرضی کے منٹس لکھ دے، اعظم خان کہہ رہا ہے کہ اس کے منٹس بنالیتے ہیں اور فوٹو سٹیٹ کرکے رکھ لیتے ہیں۔ اعظم خان نے کہا کہ لیٹر 8 تاریخ کو آیا جس پر عمران خان نے کہا کہ یہ میٹنگ 7 تاریخ کو ہوئی، ہم نے امریکیوں کا نام نہیں لینا ، پلیز کسی کے منہ سے ملک کا نام نہ نکلے۔

اسد عمر نے کہا کہ آپ جان کر اسے لیٹر کہہ رہے ہیں؟ یہ لیٹر نہیں ہے بلکہ میٹنگ کی ٹرانسکرپٹ ہے، اس پر عمران خان نے کہا یہ میٹنگ کی ٹرانسکرپٹ ہے اور ٹرانسکرپٹ یا لیٹر ایک ہی چیز ہے، لوگوں کو ٹرانسکرپٹ کا نہیں معلوم عوامی جلسوں میں ایسے ہی کہا جاتا ہے!
She is not considering the breach of her system...with security guard which resulted a increase in Shareef family......population........that is what she is looking for now...
 
Sponsored Link