حکومت کا موٹرسائیکل سواروں کیلئے احساس پیٹرول کارڈ لانے کا فیصلہ

petrol-price-and-card.jpg


صحت کارڈ کے بعد حکومت نے احساس پیٹرول کارڈ لانے کا فیصلہ کرلیا ہے، اس کارڈ کے ذریعے موٹرسائیکل سوار ریاعتی نرخوں پر پیٹرول بھرواسکیں گے،حکومت کا مالی سال 2022-23 کے بجٹ میں سرکاری شعبے کے ملازمین کی تنخواہوں میں اضافے کا ارادہ بھی ہے۔

پاکستان انسٹی ٹیوٹ آف ڈویلپمنٹ اکنامکس کی رپورٹ کے بعد بھی بیوروکریٹس کے مراعات کم کرنے پر کوئی غور نہیں کیا گیا،جس میں انکشاف کیا گیا کہ پاکستان میں اعلیٰ بیوروکریٹس اقوام متحدہ کے ملازمین سے زیادہ تنخواہیں اور مراعات حاصل کر رہے ہیں۔

وزیراعظم عمران خان بھی اس سے قبل مارکیٹ کی بنیاد پر تنخواہیں دینے کا اشارہ دے چکے ہیں، وزیر خزانہ شوکت ترین کی زیر صدارت فنانس ڈویژن میں میکرو اکنامک ایڈوائزری گروپ کے اجلاس کا ہوا،میٹنگ میں شریک ایک اہلکار نے دی نیوز کو بتایا کہ اجلاس میں تین اہم نکات پر گفتگو کی گئی۔

انہوں نے بتایا کہ اجلاس میں متوسط طبقے کو ریلیف فراہم کرنے کے لیے مختلف موثر اقدامات زیر بحث آئے۔ معیشت میں ترقی کی رفتار کو برقرار رکھنے کے ساتھ ساتھ ان مسائل سے نمٹنے کے لیے عملی حل کا بھی تجزیہ کیا گیا،اجرت میں اضافہ، انٹرن شپ، توانائی کے شعبے میں اقتصادی اصلاحات، 5.6 فیصد جی ڈی پی کی شرح نمو، 15 فیصد اضافے کے ساتھ ترقی کی رفتار کو مزید آگے بڑھانے جیسی تجاویز پر غور کیا گیا۔

اجلاس میں پاکستان کی معیشت کے بنیادی میکرو اکنامک اشاریوں کا جائزہ لیا گیا۔ ایم ای اے جی کے اراکین نے معیشت کی پیش رفت پر اطمینان کا اظہار کیا،پائیدار میکرو اکنامک اسٹیبلائزیشن ناگزیر ہے،بڑھتی ہوئی عالمی قیمتوں سے نمٹنے کے لیے چیلنجز اور متعلقہ اقدامات پر غور کیا گیا۔

وزیر خزانہ نے کامیاب پاکستان پروگرام کی اسٹیئرنگ کمیٹی کے اجلاس کی صدارت بھی کی،جس میں چیئرمین این پی ایچ ڈی اے، صدر بینک آف پنجاب، چیئرمین ایس ای سی پی، اخوت فاؤنڈیشن کے بانی ڈاکٹر امجد ثاقب اور سینئر افسران نے شرکت کی۔

بریفنگ میں بتایا گیا کہ پروگرام کا پہلا مرحلہ کامیابی سے جاری ہے اور ملک بھر سے ایس ایم ایس کے ذریعے قرضہ جات کی درخواستیں موصول ہو رہی ہیں،پسماندہ لوگوں کے معیار زندگی کو بلند کرنے کے لیے مستحق درخواست دہندگان کو ضروریات پوری کرنے کے بعد قرضے جاری کیے جا رہے ہیں،وزیر خزانہ نے کامیاب پاکستان پروگرام کی کامیابی میں تمام اسٹیک ہولڈرز کے تعاون کو سراہا۔

اخوت فاؤنڈیشن کے بانی ڈاکٹر امجد ثاقب نے اجلاس کو قرضوں کی تقسیم کے بارے میں آگاہ کیا اور کامیاب پاکستان پروگرام کے فوائد اجاگر کئے،وزیر خزانہ نے متعلقہ حکام کو معلومات تک رسائی کے مسائل کو حل کرنے کا حکم دیا اور کہا کہ کامیاب پاکستان پروگرام معاشرے کے نچلے طبقے کی بہتری کے لیے سنگ میل ثابت ہوگا۔
 
Advertisement

Kam

Minister (2k+ posts)
Increase basic salary to 30000 or 35000. Fix the pension amount to a maximum limit.
If rupee is devalued to almost 70% then salary increase should also be 70%. Why we are allowing only seiths to make money.
 

arifkarim

Chief Minister (5k+ posts)
Increase basic salary to 30000 or 35000. Fix the pension amount to a maximum limit.
If rupee is devalued to almost 70% then salary increase should also be 70%. Why we are allowing only seiths to make money.
Why? First govt does artificial overvaluation that leads to real devaluation and inflation. And then you want govt to artificially increase pensions, paychecks without real growth in productivity? Insane!
07EC34B3-652D-43AD-B2BE-FDD91F71A333.jpeg
31A20DEF-BB62-4BD9-A0E2-740766734A36.jpeg
 

Kam

Minister (2k+ posts)
The way we do here in the West. Put every employer in jail for not paying the minimum wage according to scale
This is the main issue. Government need to increase basic salary and implement it.
Also effective measures should be taken to control inflation. You cannot leave businessmen to do whatever they want.
A price control and approval mechanism should be there. Without proper permission, no one should be allowed to increase prices.
Our country scenario for open market is different. We do not have competition but mafia
 
Sponsored Link