سعودی عرب میں مبینہ قحبہ خانہ چلانے والا پاکستانی گرفتار

11pakistaniareesjismgrosh.jpg

سعودی عرب کے دارالحکومت ریاض سے مبینہ طور پر فحاشی کا اڈہ چلانے والا پاکستانی شہری گرفتار کرلیا گیا ہے۔

خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق ریاض پولیس نے ایک ویڈیو منظر عام پر آنے کے بعد پاکستانی شہری کو غیر ملکی خواتین سے زبردستی جسم فروشی کا دھندہ کروانے کے الزام میں گرفتار کیا ہے۔

سعودی میڈیا رپورٹس کے مطابق سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی ویڈیو پر ریاض کے اٹارنی جنرل نے نوٹس لیا اور پولیس کو کارروائی کی ہدایات کی تھی جس کے بعد پولیس نے گھروں میں کام کرنے والی غیر ملکی ملازماؤں سے جسم فروشی کا دھندہ کروانے کے الزام میں پاکستانی شہری کو گرفتار کیا۔

سامنے آنے والی ویڈیو اسی پاکستانی شہری کے ریاض میں موجود اڈے کی تھی جہاں غیر ملکی ملازماؤں کو رکھا گیا تھا اور وہ غیر اخلاقی سرگرمیاں کرتی دکھائی دے رہی تھیں۔

پولیس کا کہنا ہے کہ پاکستانی شہری کفیلوں کے گھروں سے فرار ہونے والی گھریلو ملازماؤں کو پناہ دینے کا جھانسا دے کر سعودی قوانین اور سماجی آداب کے منافی کاموں پر مجبور کردیتا تھا۔

سعودی پبلک پراسیکیوٹر نے واقعہ سے متعلق قانونی رائے دیتے ہوئے کہا کہ ملزم کے خلاف قانون کی دفعہ 4 کے تحت انسانی اسمگلنگ کے جرائم کی عدالت میں مقدمہ چلایا جائے گا ، جرم ثابت ہونے پر ملزم کو 10 لاکھ ریال یا 15 سال قید یا دونوں کی سزا ہوسکتی ہے۔
 
Advertisement

Bubber Shair

Chief Minister (5k+ posts)
ملزم کا تعلق کے پی کے سے ہے۔ اگے تسی آپ سمجھدار سیانے بیانے ہو
 

Okara

Prime Minister (20k+ posts)
ملزم کا تعلق کے پی کے سے ہے۔ اگے تسی آپ سمجھدار سیانے بیانے ہو
U mean someone from KPK took franchise from Shareef family? Masha Allah Nawaz's grand father was into this business and Nawaz too and if u don't agree then search for Kim Barker?
 

[email protected]

Politcal Worker (100+ posts)
اس منحوس کو پکڑ لیا مگر جو شخص اصل میں اس سر زمین کو نجس کرنے پر تلا ہوا ہے وہ اس ملک کا حکمران ہے۔نام نہاد خادم حرمین شریف اسلام کے نام پر حکمرانی کر رہا ہے مگر خدمت شیطان کی کر رہا ہے۔۔۔۔۔۔
 
Sponsored Link