شادی کے بعد شناختی کارڈ کا حصول، نادرا نے خواتین کا بڑا مسئلہ حل کر دیا

10nadracrd.jpg

چیئرمین نادرا (نیشنل ڈیٹابیس اینڈ رجسٹریشن اتھارٹی) طارق ملک نے خواتین کی اس کشمکش کو ختم کر دیا ہے کہ شادی کے بعد وہ اپنے شناختی کارڈ پر والد کا ہی نام رہنے دیں یا شوہر کا نام لکھوائیں۔

نادرا کی جانب سے اعلان کیا گیا ہے کہ یہ خاتون کی مرضی ہے اگر وہ اپنے شناختی کارڈ پر اپنے شوہر کا نام لکھوانا چاہتی ہو تو ہی اس کے شناختی کارڈ پر نام تبدیل کیا جائے گا ورنہ اس کے والد کا ہی نام رہنے دیا جائے گا۔

چیئرمین نادرا نے دیہی خواتین کی سالانہ کانفرنس سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے نادرا کی پالیسی میں تبدیلی کی ہے جس کے بعد اب نیا رول لاگو ہو گا کہ شادی کے بعد عورت کی مرضی ہے شناختی کارڈ میں باپ کا نام لکھوائے یا خاوند کا، عورتوں کی رجسٹریشن کے لیے نادرا میں خواتین پر مبنی سپیشل ڈیپارٹمنٹ بنا دیا گیا ہے۔


انہوں نے کہا کہ یہ ڈیپارٹمنٹ خواتین کی رجسٹریشن کی پالیسی مرتب کرے گا، تمام خواتین کو کارڈ بنوانا چاہیے، ہم اقلیتی برادری کی ترجیح بنیادوں پر رجسٹریشن کر رہے ہیں، نادرا میں کرپشن کسی صورت برداشت نہیں کریں گے۔

چیئرمین نادرا نے کہا کہ مختلف کیسز میں 262 ملازمین چارج شیٹ ہو چکے ہیں اور 107 کو نوکریوں سے نکال دیا گیا ہے۔ پہلا شناختی کارڈ فری دیا جاتا ہے، اگر کوئی فیس وصول کرے تو نادرا میں شکایات درج کرائیں۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ اپنے بچوں کو نادرا کے ساتھ رجسٹرڈ کروائیں، اگر بیس سال کی عمر کے بعد کروائیں گے تو مختلف پہلووؤں سے تحقیق کی جاتی ہے۔
 
Advertisement
Sponsored Link