لیہ فحش ویڈیو کیس کا ڈراپ سین، مدعیہ خاتون اور خاوند ماسٹر مائنڈ نکلے

7layyahporonodrposcene.jpg

لڑکیوں کو اغوا کر کے فحش فلموں کا دھندا کرنے والے مرکزی ملزم وسیم کو نوشہرہ سے گرفتار کر لیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق لیہ میں فحش ویڈیوز بنانے والے کیس کا ڈراپ سین ہو گیا ہے، مدعیہ خاتون کرن بی بی عرف صائمہ اور اس کا خاوند واقعے کے ماسٹر مائنڈ نکلے۔ پولیس کے مطابق لڑکیوں کو اغوا کر کے فحش فلموں کا دھندا کرنے والے مرکزی ملزم رانا وسیم عرف شاہزیب کو نوشہرہ سے گرفتار کر لیا گیا ہے۔


نجی ٹی وی چینل جی این این کی خبر کے مطابق لیہ میں کچھ عرصہ قبل لڑکیوں کو اغوا کر کے جانوروں کے ساتھ شرمناک حرکات کرنے پر مجبور کر کے ویڈیو بنانے والا واقعہ سامنے آنے کے بعد وزیراعلیٰ پنجاب چوہدری پرویز الٰہی کے نوٹس پر پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے ماسٹر مائنڈ مرکزی ملزم رانا وسیم عرف شاہزیب کو نوشہرہ سے گرفتار کر لیا ہے۔ پولیس نے جدید ٹیکنالوجی کی مدد سے ملزم کو گرفتار کر لیا ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ رانا وسیم عرف شاہزیب نے مقدمہ کی مدعیہ کرن بی بی عرف صائمہ کے ساتھ مل کر خودساختہ فحش ویڈیو بنائی تھی۔ ملزمان کا مقصد مقدمے میں نامزد افراد سے رقم ہتھیانا اور دیگر ناجائز مقاصد پورا کرنا ہو سکتا ہے۔

یاد رہے کہ کچھ عرصہ قبل یہ انکشاف ہوا تھا کہ لیہ کے علاقے میں ایک منظم گروپ سرگرم ہے جو لڑکیوں کو اغواءکرکے جنسی زیادتی کی ویڈیوز بناتا ہے اور فحش فلموں کی ویب سائٹس پر اپ لوڈ کرتا ہے۔ یہ گروپ جانوروں کے ساتھ لڑکیوں کو شرمناک حرکات کرنے پر مجبور کرتا اور اس قبیح فعل کی ویڈیوز بنا کر انٹرنیٹ پر اپ لوڈ کرتا ہے۔ پولیس نے واقعہ میں استعمال ہونے والا کتا اور دو ملزم گرفتار کر لیے تھے۔

درخواست 22 سالہ کرن نامی خاتون کے والد کی مدعیت میں تھانہ صدرلیہ کو دی گئی تھی اور لکھا گیا تھا کہ ملزمان نے جھوٹی پیشی پر بلایا او اسلحہ کے زور پر اغوا کیا۔ نامعلوم جگہ پر لے جا کر پہلے خود زیادتی کی اور پھر ہاتھ اور منہ باندھ کر کتے کے ساتھ فحش ویڈیو بھی بنائی تھی جبکہ اب مدعیہ خاتون کرن بی بی عرف صائمہ اور اس کا خاوند ہی واقعے کے اصل ماسٹر مائنڈ نکلے ہیں۔ مرکزی ملزم رانا وسیم عرف شاہزیب کو پولیس نے جدید ٹیکنالوجی کی مدد سے نوشہرہ سے گرفتار کر لیا ہے۔
 

Visionartist

Minister (2k+ posts)
7layyahporonodrposcene.jpg

لڑکیوں کو اغوا کر کے فحش فلموں کا دھندا کرنے والے مرکزی ملزم وسیم کو نوشہرہ سے گرفتار کر لیا گیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق لیہ میں فحش ویڈیوز بنانے والے کیس کا ڈراپ سین ہو گیا ہے، مدعیہ خاتون کرن بی بی عرف صائمہ اور اس کا خاوند واقعے کے ماسٹر مائنڈ نکلے۔ پولیس کے مطابق لڑکیوں کو اغوا کر کے فحش فلموں کا دھندا کرنے والے مرکزی ملزم رانا وسیم عرف شاہزیب کو نوشہرہ سے گرفتار کر لیا گیا ہے۔


نجی ٹی وی چینل جی این این کی خبر کے مطابق لیہ میں کچھ عرصہ قبل لڑکیوں کو اغوا کر کے جانوروں کے ساتھ شرمناک حرکات کرنے پر مجبور کر کے ویڈیو بنانے والا واقعہ سامنے آنے کے بعد وزیراعلیٰ پنجاب چوہدری پرویز الٰہی کے نوٹس پر پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے ماسٹر مائنڈ مرکزی ملزم رانا وسیم عرف شاہزیب کو نوشہرہ سے گرفتار کر لیا ہے۔ پولیس نے جدید ٹیکنالوجی کی مدد سے ملزم کو گرفتار کر لیا ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ رانا وسیم عرف شاہزیب نے مقدمہ کی مدعیہ کرن بی بی عرف صائمہ کے ساتھ مل کر خودساختہ فحش ویڈیو بنائی تھی۔ ملزمان کا مقصد مقدمے میں نامزد افراد سے رقم ہتھیانا اور دیگر ناجائز مقاصد پورا کرنا ہو سکتا ہے۔

یاد رہے کہ کچھ عرصہ قبل یہ انکشاف ہوا تھا کہ لیہ کے علاقے میں ایک منظم گروپ سرگرم ہے جو لڑکیوں کو اغواءکرکے جنسی زیادتی کی ویڈیوز بناتا ہے اور فحش فلموں کی ویب سائٹس پر اپ لوڈ کرتا ہے۔ یہ گروپ جانوروں کے ساتھ لڑکیوں کو شرمناک حرکات کرنے پر مجبور کرتا اور اس قبیح فعل کی ویڈیوز بنا کر انٹرنیٹ پر اپ لوڈ کرتا ہے۔ پولیس نے واقعہ میں استعمال ہونے والا کتا اور دو ملزم گرفتار کر لیے تھے۔

درخواست 22 سالہ کرن نامی خاتون کے والد کی مدعیت میں تھانہ صدرلیہ کو دی گئی تھی اور لکھا گیا تھا کہ ملزمان نے جھوٹی پیشی پر بلایا او اسلحہ کے زور پر اغوا کیا۔ نامعلوم جگہ پر لے جا کر پہلے خود زیادتی کی اور پھر ہاتھ اور منہ باندھ کر کتے کے ساتھ فحش ویڈیو بھی بنائی تھی جبکہ اب مدعیہ خاتون کرن بی بی عرف صائمہ اور اس کا خاوند ہی واقعے کے اصل ماسٹر مائنڈ نکلے ہیں۔ مرکزی ملزم رانا وسیم عرف شاہزیب کو پولیس نے جدید ٹیکنالوجی کی مدد سے نوشہرہ سے گرفتار کر لیا ہے۔
 
Sponsored Link