"مودی دنیا کی آخری امید"نیو یارک ٹائمز کی صفحہ اول کی خبر کی حقیقت کیا ہے؟

fac1211.jpg


سوشل میڈیا پر نیویارک ٹائمز کی صفحہ اول پر شائع ہونے والی ایک خبر کی تصویر تیزی سے وائرل ہورہی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ بھارتی وزیراعظم نریندر مودی دنیا کی آخری بہترین امید ہیں۔

خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق سوشل میڈیا پر ایک تصویر گردش کررہی ہے جو دیکھنے میں امریکی جریدے نیویارک ٹائمز کے صفحہ اول کی ایک سٹوری معلوم ہوتی ہے۔

اس خبر کی سرخی انتہائی دلچسپ ہے کیونکہ یہ بھارتی وزیراعظم نریندر مودی سے متعلق ہے، سرخی میں کہا گیا ہے کہ" دنیا کیلئے آخری، بہترین امید"، ذیلی سرخی میں لکھا گیا ہے کہ"دنیا کے سب سے پسندیدہ اور طاقتور ترین لیڈر ، ہم پر مہربان ہونے کیلئے موجود ہیں"۔

FAPKtiFVEAcLRin.jpg

نیویارک ٹائمز کے صفحہ اول پر نریندر مودی سے متعلق ایسی کوئی خبر شائع ہونے کی خبر نہ صرف غیر مصدقہ ہے بلکہ خبر تیار کرنیوالے والے ستمبر کےسپیلنگ بھی غلط لکھ ڈالے۔

FAPKt0hVcAA5GME.jpg


سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی تصویر درحقیقت فوٹوشاپ سافٹ ویئر کی مدد کی تیار کی گئی ہے۔

اس وائرل تصویر کے سامنے آنے کی ٹائمنگ بہت اہم ہے کیونکہ یہ اس وقت سامنے آئی جس وقت نریندر مودی اپنا تین روزہ دورہ امریکہ مکمل کرکے اتوار کو واپس لوٹے ہیں۔


اپنے دورے کے دوران نریندر مودی نےاقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے76ویں اجلاس سے خطاب بھی کیا اور کواڈ سمٹ میں بھی شرکت کی۔

فیکٹ چیک ویب سائٹ نے بھی اس تصویر کے جعلی اور فوٹوشاپڈ ہونے کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا ہے کہ نیویارک ٹائمز نے اتوار کو نریندر مودی سے متعلق ایسی کوئی خبر شائع نہیں کی ہے ، یہ سکرین شاٹ بھارتی سوشل میڈیا ونگز کی جانب سے نریندر مودی کی بڑائی کیلئے کیا جانے والے ایک پراپیگنڈے کا ہی ایک پہلو ہے۔
 
Advertisement
Last edited:
Sponsored Link