نوازشریف پاکستان کے مقبول ترین لیڈربن گئے، سروے نتائج سامنے آگئے

ipoii1i121.jpg


نوازشریف پاکستان کے مقبول ترین لیڈربن گئے، عمران خان کی مقبولیت میں کمی۔۔ انسٹیٹیوٹ فار پبلک اوپینین ریسرچ میں انکشاف

تفصیلات کے مطابق انسٹیٹیوٹ فار پبلک اوپینین ریسرچ (آئی پور)نے پاکستانی عوام کی رائے پر مبنی نیا سروے جاری کردیا ہے جس کے مطابق نوازشریف اس وقت پاکستان کے مقبول ترین لیڈر ہیں جن کی مقبولیت 33 فیصد ہے۔

وزیراعظم پاکستان عمران خان کی مقبولیت کم ہوگئی ہے اور سروے میں 30 فیصد پاکستانیوں نے موجودہ وزیراعظم عمران خان پر اعتماد کا اظہار کای۔

سروے کے مطابق 16فیصد عوام نے بلاول زرداری جبکہ 3 فیصد نے مولانا فضل الرحمٰن پر اعتماد کا اظہار کیا۔

آئیپور سروے کے مطابق 68 فیصد پاکستانیوں نے نواز شریف کو وطن واپس آکر عدالتوں کا سامنا کرنے کامشورہ بھی دیا۔

واضح رہے کہ کچھ روز قبل آئی پور نے ایک اور سروے بھی جاری کیا تھا جس میں سوال کیا گیا تھا کہ اگر قبل ازوقت انتخابات ہوتے ہیں تو آپ کس کو ووٹ دیں گے۔


سروے کے مطابق 29 فیصد پاکستانیوں نے پاکستان مسلم لیگ (ن) کو جب کہ 28 فیصد نے پاکستان تحریک انصاف کو ووٹ دینے کا ارادہ ظاہر کیا۔

پیپلزپارٹی کی مقبولیت میں بھی اضافہ ہوا اور 15 فیصد نے پاکستان پیپلزپارٹی کو ووٹ دینے کا عزم ظاہر کیا۔

ipoo1121.webp


صوبائی اسمبلی کے انتخابات کے لیے پنجاب میں 46 فیصد نے ن لیگ کو اور 31 فیصد نے پی ٹی آئی کو ووٹ دینے کا کہا جبکہ سندھ میں 44 فیصد ووٹرز کی پہلی چوائس پیپلزپارٹی رہی جبکہ تحریک انصاف 13 فیصدکیساتھ دوسرے نمبر پررہی۔

خیبرپختونخوا جہاں تحریک انصاف کو شکست سامنا کرنا پڑا وہاں، 44 فیصد ووٹرز نے تحریک انصاف کو ہی پہلی چوائس جبکہ 17 فیصد نے جے یو آئی ووٹرز کی دوسری چوائس قراردیا۔ جبکہ 11 ، 11 فیصد نے ن لیگ اور اے این پی کو ووٹ دینے کا کہا۔

بلوچستان میں حکمران حماعت بلوچستان عوامی پارٹی اور تحریک انصاف میں سخت مقابلہ دیکھنے میں آیا، 20 فیصد نے حکمراں جماعت بلوچستان عوامی پارٹی کو ووٹ دینے کی بات کی جبکہ اٹھارہ فیصد نے تحریک انصاف کو ووٹ دینے کا کہا۔
 
Advertisement

The Sane

Chief Minister (5k+ posts)
ipoii1i121.jpg


نوازشریف پاکستان کے مقبول ترین لیڈربن گئے، عمران خان کی مقبولیت میں کمی۔۔ انسٹیٹیوٹ فار پبلک اوپینین ریسرچ میں انکشاف

تفصیلات کے مطابق انسٹیٹیوٹ فار پبلک اوپینین ریسرچ (آئی پور)نے پاکستانی عوام کی رائے پر مبنی نیا سروے جاری کردیا ہے جس کے مطابق نوازشریف اس وقت پاکستان کے مقبول ترین لیڈر ہیں جن کی مقبولیت 33 فیصد ہے۔

وزیراعظم پاکستان عمران خان کی مقبولیت کم ہوگئی ہے اور سروے میں 30 فیصد پاکستانیوں نے موجودہ وزیراعظم عمران خان پر اعتماد کا اظہار کای۔

سروے کے مطابق 16فیصد عوام نے بلاول زرداری جبکہ 3 فیصد نے مولانا فضل الرحمٰن پر اعتماد کا اظہار کیا۔

آئیپور سروے کے مطابق 68 فیصد پاکستانیوں نے نواز شریف کو وطن واپس آکر عدالتوں کا سامنا کرنے کامشورہ بھی دیا۔

واضح رہے کہ کچھ روز قبل آئی پور نے ایک اور سروے بھی جاری کیا تھا جس میں سوال کیا گیا تھا کہ اگر قبل ازوقت انتخابات ہوتے ہیں تو آپ کس کو ووٹ دیں گے۔


سروے کے مطابق 29 فیصد پاکستانیوں نے پاکستان مسلم لیگ (ن) کو جب کہ 28 فیصد نے پاکستان تحریک انصاف کو ووٹ دینے کا ارادہ ظاہر کیا۔

پیپلزپارٹی کی مقبولیت میں بھی اضافہ ہوا اور 15 فیصد نے پاکستان پیپلزپارٹی کو ووٹ دینے کا عزم ظاہر کیا۔

ipoo1121.webp


صوبائی اسمبلی کے انتخابات کے لیے پنجاب میں 46 فیصد نے ن لیگ کو اور 31 فیصد نے پی ٹی آئی کو ووٹ دینے کا کہا جبکہ سندھ میں 44 فیصد ووٹرز کی پہلی چوائس پیپلزپارٹی رہی جبکہ تحریک انصاف 13 فیصدکیساتھ دوسرے نمبر پررہی۔

خیبرپختونخوا جہاں تحریک انصاف کو شکست سامنا کرنا پڑا وہاں، 44 فیصد ووٹرز نے تحریک انصاف کو ہی پہلی چوائس جبکہ 17 فیصد نے جے یو آئی ووٹرز کی دوسری چوائس قراردیا۔ جبکہ 11 ، 11 فیصد نے ن لیگ اور اے این پی کو ووٹ دینے کا کہا۔

بلوچستان میں حکمران حماعت بلوچستان عوامی پارٹی اور تحریک انصاف میں سخت مقابلہ دیکھنے میں آیا، 20 فیصد نے حکمراں جماعت بلوچستان عوامی پارٹی کو ووٹ دینے کی بات کی جبکہ اٹھارہ فیصد نے تحریک انصاف کو ووٹ دینے کا کہا۔
حرام خور پاکستانیو،لگتا ہے ابھی تمہارے چوتڑوں میں بہت گنجائش باقی ہے
 

khanaman

Senator (1k+ posts)
If the survey is authentic it's actually not a bad place to be for PTI. With more populistic decisions in the last year of govt, which is usually the case and IK going on the campaign trail they can go back ahead easily. It's not a big gap. Actually should be an eye opener for those who thought PTI would just evaporate in the next elections.
 

Green Inside

Senator (1k+ posts)
میرے خیال سے ایک مناسب سروے ہے۔ جو پارٹی پینتیس فیصد پر چلی جاتی ہے وہ سویپ کرتی ہے۔ حکومت کے پاس اب بھی وقت ہے۔ مہنگائی ایک وال کی طرح ہوتی ہے، جس کو کم یا زیادہ کیا جا سکتا ہے۔ ایک سال بھی کنٹرول ہو جائے تو کافی مقبولیت اینٹھ سکتے ہیں۔
 

Aristo

Senator (1k+ posts)
Koun sa servay ??????mujh say to meri raie kisi nay pochi he nahi main nahi manta yeh servay chalo naso 😄
 

ali_786

MPA (400+ posts)
Ager iss Jahil quom se poocha jay ke UN mai hamaray pyaaray Nabi (pbuh) kay liay sub se ziada kis nay awaaz uthai , tou ye quom bhool chuki hay ke Imran khan wo leader hay jis ka hum ye Ehsaan nahi dai saktay jis nay hamaray pyaray Nabi ke liay sub se ziada awaaz buland ki .
Ye aik baigeret quom hay jisay achay aur buray main tameez nahi rahi . Kashmir ke liay sub se ziada bolnay wala imran khan hay .
sub se ziada tax ikatha kernay wala imran khan .
sub se ziada aur Sasti roads bananay wala imran khan .
sub se ziada Dams bananay wala imran khan .
sub se ziada export kernay wala imran khan .
sub se kum hurch pur doosray mulkoon ke doray kernay wala imran khan .
paani se sub se ziada bijli bananay wala imran khan .
PIA ko hasaray se nikalnay wala imran khan .
Pakistan post ko hasaray se nikalnay wala imran khan .
Imran khan ke daur mei sub se ziada investment pakistan mai hui .
Overseas pakistanioon ne sub se ziada Imran khan ke dorr mai paisa pakistan bhaija .
Insaaf Jawaan program Imran khan laya .
Health card Imran khan nay iss quom ko dia jis se 1000000 Rs tuk hur saal muft ilaaj kerwa saktay hain .
APNA GHUR program se log bank se qurz laiker asaan qistoon pur apna ghur bana saktay hain jo pehlay mumkin nahi tha .
kisaanoon ke liay islahaat imran khan laiker aya
 

AWAITED

Senator (1k+ posts)
ipoii1i121.jpg


نوازشریف پاکستان کے مقبول ترین لیڈربن گئے، عمران خان کی مقبولیت میں کمی۔۔ انسٹیٹیوٹ فار پبلک اوپینین ریسرچ میں انکشاف

تفصیلات کے مطابق انسٹیٹیوٹ فار پبلک اوپینین ریسرچ (آئی پور)نے پاکستانی عوام کی رائے پر مبنی نیا سروے جاری کردیا ہے جس کے مطابق نوازشریف اس وقت پاکستان کے مقبول ترین لیڈر ہیں جن کی مقبولیت 33 فیصد ہے۔

وزیراعظم پاکستان عمران خان کی مقبولیت کم ہوگئی ہے اور سروے میں 30 فیصد پاکستانیوں نے موجودہ وزیراعظم عمران خان پر اعتماد کا اظہار کای۔

سروے کے مطابق 16فیصد عوام نے بلاول زرداری جبکہ 3 فیصد نے مولانا فضل الرحمٰن پر اعتماد کا اظہار کیا۔

آئیپور سروے کے مطابق 68 فیصد پاکستانیوں نے نواز شریف کو وطن واپس آکر عدالتوں کا سامنا کرنے کامشورہ بھی دیا۔

واضح رہے کہ کچھ روز قبل آئی پور نے ایک اور سروے بھی جاری کیا تھا جس میں سوال کیا گیا تھا کہ اگر قبل ازوقت انتخابات ہوتے ہیں تو آپ کس کو ووٹ دیں گے۔


سروے کے مطابق 29 فیصد پاکستانیوں نے پاکستان مسلم لیگ (ن) کو جب کہ 28 فیصد نے پاکستان تحریک انصاف کو ووٹ دینے کا ارادہ ظاہر کیا۔

پیپلزپارٹی کی مقبولیت میں بھی اضافہ ہوا اور 15 فیصد نے پاکستان پیپلزپارٹی کو ووٹ دینے کا عزم ظاہر کیا۔

ipoo1121.webp


صوبائی اسمبلی کے انتخابات کے لیے پنجاب میں 46 فیصد نے ن لیگ کو اور 31 فیصد نے پی ٹی آئی کو ووٹ دینے کا کہا جبکہ سندھ میں 44 فیصد ووٹرز کی پہلی چوائس پیپلزپارٹی رہی جبکہ تحریک انصاف 13 فیصدکیساتھ دوسرے نمبر پررہی۔

خیبرپختونخوا جہاں تحریک انصاف کو شکست سامنا کرنا پڑا وہاں، 44 فیصد ووٹرز نے تحریک انصاف کو ہی پہلی چوائس جبکہ 17 فیصد نے جے یو آئی ووٹرز کی دوسری چوائس قراردیا۔ جبکہ 11 ، 11 فیصد نے ن لیگ اور اے این پی کو ووٹ دینے کا کہا۔

بلوچستان میں حکمران حماعت بلوچستان عوامی پارٹی اور تحریک انصاف میں سخت مقابلہ دیکھنے میں آیا، 20 فیصد نے حکمراں جماعت بلوچستان عوامی پارٹی کو ووٹ دینے کی بات کی جبکہ اٹھارہ فیصد نے تحریک انصاف کو ووٹ دینے کا کہا۔
They never conducted survey outside their country, website not updated since Feb 2021 how come the news reporting this fake survey??
 

A.jokhio

Minister (2k+ posts)
ipoii1i121.jpg


نوازشریف پاکستان کے مقبول ترین لیڈربن گئے، عمران خان کی مقبولیت میں کمی۔۔ انسٹیٹیوٹ فار پبلک اوپینین ریسرچ میں انکشاف

تفصیلات کے مطابق انسٹیٹیوٹ فار پبلک اوپینین ریسرچ (آئی پور)نے پاکستانی عوام کی رائے پر مبنی نیا سروے جاری کردیا ہے جس کے مطابق نوازشریف اس وقت پاکستان کے مقبول ترین لیڈر ہیں جن کی مقبولیت 33 فیصد ہے۔

وزیراعظم پاکستان عمران خان کی مقبولیت کم ہوگئی ہے اور سروے میں 30 فیصد پاکستانیوں نے موجودہ وزیراعظم عمران خان پر اعتماد کا اظہار کای۔

سروے کے مطابق 16فیصد عوام نے بلاول زرداری جبکہ 3 فیصد نے مولانا فضل الرحمٰن پر اعتماد کا اظہار کیا۔

آئیپور سروے کے مطابق 68 فیصد پاکستانیوں نے نواز شریف کو وطن واپس آکر عدالتوں کا سامنا کرنے کامشورہ بھی دیا۔

واضح رہے کہ کچھ روز قبل آئی پور نے ایک اور سروے بھی جاری کیا تھا جس میں سوال کیا گیا تھا کہ اگر قبل ازوقت انتخابات ہوتے ہیں تو آپ کس کو ووٹ دیں گے۔


سروے کے مطابق 29 فیصد پاکستانیوں نے پاکستان مسلم لیگ (ن) کو جب کہ 28 فیصد نے پاکستان تحریک انصاف کو ووٹ دینے کا ارادہ ظاہر کیا۔

پیپلزپارٹی کی مقبولیت میں بھی اضافہ ہوا اور 15 فیصد نے پاکستان پیپلزپارٹی کو ووٹ دینے کا عزم ظاہر کیا۔

ipoo1121.webp


صوبائی اسمبلی کے انتخابات کے لیے پنجاب میں 46 فیصد نے ن لیگ کو اور 31 فیصد نے پی ٹی آئی کو ووٹ دینے کا کہا جبکہ سندھ میں 44 فیصد ووٹرز کی پہلی چوائس پیپلزپارٹی رہی جبکہ تحریک انصاف 13 فیصدکیساتھ دوسرے نمبر پررہی۔

خیبرپختونخوا جہاں تحریک انصاف کو شکست سامنا کرنا پڑا وہاں، 44 فیصد ووٹرز نے تحریک انصاف کو ہی پہلی چوائس جبکہ 17 فیصد نے جے یو آئی ووٹرز کی دوسری چوائس قراردیا۔ جبکہ 11 ، 11 فیصد نے ن لیگ اور اے این پی کو ووٹ دینے کا کہا۔

بلوچستان میں حکمران حماعت بلوچستان عوامی پارٹی اور تحریک انصاف میں سخت مقابلہ دیکھنے میں آیا، 20 فیصد نے حکمراں جماعت بلوچستان عوامی پارٹی کو ووٹ دینے کی بات کی جبکہ اٹھارہ فیصد نے تحریک انصاف کو ووٹ دینے کا کہا۔
Joke of the Century...
 

Kavalier

Chief Minister (5k+ posts)
Youthia used to trust these surveys blindly before 2018 elections when IK was ahead in popularity.
Problem yeah hay k yahan post karany walon mayn aik bhi shayad aisa nhi hay jo Pakistan mayn ho, inko ground realities ka pata hi nhi hay. Jo thoray bohot sane elements thay, staunch PTI workers hony k bawajood wo ab comment nhi kartay, like e.g. miafridi. Why? Because they know what is on ground now. Please mark my words once again, PTI not going to get more than 20 seats in whole Pakistan, that too will be the seats of electables, no vote on the name of party. PTI is finished unfortunately and no one else is responsible but Khan saab himself. Sadly :(
 

Chillpill

Councller (250+ posts)
good to read that even you... one of the old stalwarts of PTI supporter of the forum now believe that imam kokaini is just a conman... not more ... man full of himself ... who see ills in others and nothing in himself .. a greedy asshole who who wants fame and luxury on other`s account
 

Hate_Nooras

Chief Minister (5k+ posts)
Problem yeah hay k yahan post karany walon mayn aik bhi shayad aisa nhi hay jo Pakistan mayn ho, inko ground realities ka pata hi nhi hay. Jo thoray bohot sane elements thay, staunch PTI workers hony k bawajood wo ab comment nhi kartay, like e.g. miafridi. Why? Because they know what is on ground now. Please mark my words once again, PTI not going to get more than 20 seats in whole Pakistan, that too will be the seats of electables, no vote on the name of party. PTI is finished unfortunately and no one else is responsible but Khan saab himself. Sadly :(
So be it. Winning and losing is part and parcel of politics. But if any cunt them complains that they are treated as shit by people that have robbed them and have always treated as shit, then they can fuck off. Do you think any ghairat mand person will ever vote for a party led by a criminal on the run?
 

abdlsy

Prime Minister (20k+ posts)
ipoii1i121.jpg


نوازشریف پاکستان کے مقبول ترین لیڈربن گئے، عمران خان کی مقبولیت میں کمی۔۔ انسٹیٹیوٹ فار پبلک اوپینین ریسرچ میں انکشاف

تفصیلات کے مطابق انسٹیٹیوٹ فار پبلک اوپینین ریسرچ (آئی پور)نے پاکستانی عوام کی رائے پر مبنی نیا سروے جاری کردیا ہے جس کے مطابق نوازشریف اس وقت پاکستان کے مقبول ترین لیڈر ہیں جن کی مقبولیت 33 فیصد ہے۔

وزیراعظم پاکستان عمران خان کی مقبولیت کم ہوگئی ہے اور سروے میں 30 فیصد پاکستانیوں نے موجودہ وزیراعظم عمران خان پر اعتماد کا اظہار کای۔

سروے کے مطابق 16فیصد عوام نے بلاول زرداری جبکہ 3 فیصد نے مولانا فضل الرحمٰن پر اعتماد کا اظہار کیا۔

آئیپور سروے کے مطابق 68 فیصد پاکستانیوں نے نواز شریف کو وطن واپس آکر عدالتوں کا سامنا کرنے کامشورہ بھی دیا۔

واضح رہے کہ کچھ روز قبل آئی پور نے ایک اور سروے بھی جاری کیا تھا جس میں سوال کیا گیا تھا کہ اگر قبل ازوقت انتخابات ہوتے ہیں تو آپ کس کو ووٹ دیں گے۔


سروے کے مطابق 29 فیصد پاکستانیوں نے پاکستان مسلم لیگ (ن) کو جب کہ 28 فیصد نے پاکستان تحریک انصاف کو ووٹ دینے کا ارادہ ظاہر کیا۔

پیپلزپارٹی کی مقبولیت میں بھی اضافہ ہوا اور 15 فیصد نے پاکستان پیپلزپارٹی کو ووٹ دینے کا عزم ظاہر کیا۔

ipoo1121.webp


صوبائی اسمبلی کے انتخابات کے لیے پنجاب میں 46 فیصد نے ن لیگ کو اور 31 فیصد نے پی ٹی آئی کو ووٹ دینے کا کہا جبکہ سندھ میں 44 فیصد ووٹرز کی پہلی چوائس پیپلزپارٹی رہی جبکہ تحریک انصاف 13 فیصدکیساتھ دوسرے نمبر پررہی۔

خیبرپختونخوا جہاں تحریک انصاف کو شکست سامنا کرنا پڑا وہاں، 44 فیصد ووٹرز نے تحریک انصاف کو ہی پہلی چوائس جبکہ 17 فیصد نے جے یو آئی ووٹرز کی دوسری چوائس قراردیا۔ جبکہ 11 ، 11 فیصد نے ن لیگ اور اے این پی کو ووٹ دینے کا کہا۔

بلوچستان میں حکمران حماعت بلوچستان عوامی پارٹی اور تحریک انصاف میں سخت مقابلہ دیکھنے میں آیا، 20 فیصد نے حکمراں جماعت بلوچستان عوامی پارٹی کو ووٹ دینے کی بات کی جبکہ اٹھارہ فیصد نے تحریک انصاف کو ووٹ دینے کا کہا۔

😂 🤣 😅😇🥳🤓🤣
 
Sponsored Link