6ہزار ارب روپے کی ٹیکس کلیکشن، کریڈٹ کس کو جاتا ہے؟

4fbrrecordtaxcredit.jpg

ایف بی آر (فیڈرل بورڈ آف ریونیو) نے 6 ہزار ارب روپے کا ریکارڈ ٹیکس اکٹھا کر لیا جس پر سابق وزیر خزانہ شوکت ترین اور ترجمان وزارت خزانہ مزمل اسلم نے کہا ہے کہ اس کا کریڈٹ عمران اور ان کی ٹیم کو جاتا ہے۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری اپنے بیان میں سابق وزیر خزانہ شوکت ترین نے کہا کہ یہ عمران خان کی قیادت میں مضبوط معاشی ترقی اور ٹیکس پالیسی سے ممکن ہوا۔



انہوں نے کہا کہ اب ناقص ٹیکس پالیسیوں کی طرف دوبارہ نہیں جانا چاہیے، پہلے سے ٹیکس دہندہ لوگوں پر نئے ٹیکس نہ لگائے جائیں۔

دوسری جانب پاکستان تحریک انصاف کے ترجمان مزمل اسلم نے ایف بی آر، پی ٹی آئی اورشوکت ترین کو مبارک باد دیتے ہوئے کہا کہ 20 سالوں میں یہ پہلا موقع ہے کہ ایف بی آر نے نہ صرف اپنے ہدف کو عبور کیا ہے بلکہ جی ڈی پی میں 2 فیصد ٹیکس بھی شامل کیا ہے۔


انہوں نے یہ بھی کہا کہ "امپورٹڈ حکومت کو پی ٹی آئی سے سبق سیکھنا چاہیے"۔

یاد رہے کہ ایف بی آر نے گزشتہ سال کے مقابلے میں رواں برس ایک ہزار ارب سے زیادہ ٹیکس وصول کیا ہے۔ ادارے نے 2021 میں 4ہزات732 ارب روپے کا ٹیکس وصول کیا تھا جبکہ رواں سال ٹیکس وصولی 5 ہزار 829 ارب ہے۔

جب کہ رواں سال ٹیکس وصولی کا ہدف 6100 ارب رکھا گیا تھا۔
 
Advertisement

Siberite

Chief Minister (5k+ posts)
It goes to IK and his Government. It was difficult target to achieve but they squeezed every ball they could find . People's screams were neglected .....
 

Awan S

Chief Minister (5k+ posts)
ٹیکس کلیکشن پچھلے دس سال سے بڑھتی جا رہی ہے کیونکے ٹیکس نیٹ میں نئے لوگ آ رہے ہیں یہنی فا ایلرز کی تحداد مسلسل بڑھ رہی ہے دو ہزار اٹھارہ سے پہلے کی حکومت نے اپنے پانچ سال میں ٹیکس تقریبا ڈبل کیا - موجودہ حکومت نون فا الر کے لئے زندگی مشکل کرنے جا رہی ہے اگر وہ گھر نہ خرید سکتیں کار نہ خرید سکیں پاسپورٹ نہ ملے بلکےبینک اکاؤنٹ تک نہ کھول سکیں وغیرہ تو اس سے فا ایلرز کی تحداد میں بہت اضافہ ہو گا جس سے ٹیکس کافی بڑھے گا - ہمارے ملک میں سالانہ ٹیکس فا ایل کرنے پر مجبور کرنے پر کوئی نظام ہی نہیں تھا

 
Sponsored Link