ASI Muhammad Bakhsh Burst Into Tears After Seeing Victim Girl In Hospital

Geek

Chief Minister (5k+ posts)

بچی کی حالت دیکھی نہیں جارہی تھی ڈاکٹر بھی 6 گھنٹے تک روتا رہا، اے ایس آئی آبدیدہ

کشمور درندگی کے واقعے کا ذکر کرتے ہوئے اے ایس آئی محمد بخش برڑو آبدیدہ ہوگئے اور کہا کہ بچی کی حالت دیکھی نہیں جارہی تھی ڈاکٹر بھی 6 گھنٹے تک روتا رہا۔

تقریب کے آخر میں مہمان خصوصی اے ایس آئی محمد بخش نے خطاب کرتے ہوئے بتایا کہ متاثرہ بچی کی والدہ جب میرے پاس آئی تو رو رہی تھی اور والدہ کو میں اپنی بہن سمجھ کر گھر لے گیا، متاثرہ والدہ نے انہیں 2 موبائل فون نمبر دیئے دونوں نمبرمیں نے ایس ایس پی کو دیئے متاثرہ خاتون 10 روز تک میرے پاس رہی اور مسلسل روتی رہی۔

انہوں نے بتایا کہ ملزم نے بچی سے بات کروائی تو وہ رو رہی تھی، ملزماں کے کہنے پر دوسری خاتون لانے کا وعدہ کیا میں نے بیٹی کو کہا کہ اس سے فون پر بات کرو اعتماد حاصل کرنے کے بعد ملزمان نے انہیں کشمور بلایا، بیٹی ریشما خاتون کے ساتھ گئی اورملزم سے فون پر بات بھی کرتی رہی جس کے بعد یک اپ پر موجود پولیس پارٹی نے فوری ملزم کو پکڑ لیا۔

اے ایس آئی محمد بخش واقعہ سناتے ہوئے آبدیدہ ہوگئے۔ انہوں نے کہا کہ ملزم کے گھر گیا تو بچی نظر نہیں آرہی تھی ملزمان نے ایک گندے سے کپڑے میں بچی کو لپیٹ رکھا تھا بچی کی حالت دیکھی نہیں جارہی تھی۔

محمد بخش نے بتایا کہ متاثرہر بچی کو اسپتال لے کرگیا تو بچی کا آپریشن کرنے والا ڈاکٹر بھی 6 گھنٹے تک روتا رہا، اے ایس آئی محمد بخش نے کہا کہ اگر متاثرہ بچی پہلے مل جاتی تو وہ ملزم کو دیکھتے ہی گولی مار دیتا، یا پھر اس کے ٹکڑے ٹکڑے کردیتا۔ انہوں نے کہا کہ وہ محبت اور سپورٹ کرنے پر اپنے پولیس افسران اورعام شہریوں کو سلام پیش کرتے ہیں۔

کسی پر بھروسہ اوراعتبار نہ کریں، اے ایس آئی کی بہادر بیٹی کا پیغام

کشمورمیں کمسن بچی کوزیادتی کانشانہ بنانے والے درندہ صفت ملزمان کو گرفتار کرنے والے اے ایس آئی محمد بخش کی بہادربیٹی ریشما نے سینٹرل پولیس آفس میں میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے بتایا کہ متاثرہ خاتون کی بیٹی بہت رو رہی تھی اور اس کی آواز سن کروالد کے ساتھ مشن میں شامل ہونے کا فیصلہ کیا اور یہ تہیہ کرلیا تھا اگران کی جان جاتی ہے تو جائے لیکن متاثرہ بچی کو کسی بھی صورت میں درندہ صفت ملزمان کے چنگل سے حاصل کرنا ہے۔

اے ایس آئی کی بیٹی نے کہا کہ ریشما نے والدین کو اپنے بچوں کو محفوظ رکھنے کا پیغام دیتے ہوئے کہا کہ اگرآپ اپنے بچوں کواسکول بھیج رہے ہیں تو کسی پر بھروسہ اوراعتبار نہ کریں بچوں کو خود اسکول لیکرجائیں اورخود ہی اسکول سے واپس گھرلائیں۔


 
Last edited by a moderator:

The Sane

Senator (1k+ posts)
ہماری سوسائٹی اس لیے بھی برباد ہوئی کیونکہ ہمارے حکمران خود ۱۲ نمبریے تھے. جنہیں اپنا شکم بھرنے سے فرصت نہ ہو وہ قوم کو کیا انصاف دیں گے۔ ہیاں بھی کارنامہ ایک انسان اور اس کی عظیم فیملی کا ہے، زرداری اور اس کی ہم جنس پرست اولاد کی جانے بلا
 

The Sane

Senator (1k+ posts)
What happened to the motor way rape case criminal who confessed to his crime? Speedy justice in every case is needed to curb such cases.
The flaw is in our judicial system both bench and bar. Police apprehended that beast. Now, we are sitting and looking at the thin air for the case to conclude and justice be served. This is the story in 99% of cases which make it to courts. Yet, when it comes to giving relief to bastards like Khoti sharif and Murdari’s, the cases are tried at exponential speed.
 

Forceful

Voter (50+ posts)
For 10 days little princess was being raped while system was asleep, mother was wandering here and there for justice. Meanwhile ASI offered her home to stay.
It could have done much easily by tracking the location of that animal, the little girl could hav saved from suffering and trauma she went through for 10 days.

Although M. Bakhash deserve respect and rewards but same time What a shame for our system, what about those who fail to perform their duty?

Use of technology and special task force should have appointed to rescue the girl right after mother approached the authorities
 

abduloz

Politcal Worker (100+ posts)
سلام اس باپ اور بیٹی کو
جنھوں نے اپنے آپ کو خطرے میں ڈال اس کام کو سر انجام دیا
اگر کوئی بتا سکے کہ اس نامردور
کا کیا بنا کسی نے اس کو جہنم واصل کیا بے یا وہ ابھی ذندہ بے
بھت شکریہ
 

abduloz

Politcal Worker (100+ posts)
بھائیو اس ریپ کی وبا سے بچنے کا بھت معقول حل بے
اگر حکومت یہ قانون بنا دے کہ ریپ کرنے والے کو سزائے موت عوام کے ھاتوں سے ھو گی
اور اس سے پہلے ریپ کرنے والے
کے گھر کی کسی بھی عورت کے ساتھ بھی ت
یہی سلوک کیا جاے گا
اس کو صرف علامتی طور پر ھی سھی لاگو کیا
جاےاور پھر دیکھیں کس ۔میں ھمت
کرتا بے
کوئی نارمل انسان اس گناہ کے قریب نھئ جاے
گا جس کو اپنی ماں بہن بیٹی بیوی کی
عزت پیاری بوٹی گی
پاکستان میں لوگ جانور بن گے ھئں
 

akinternational

Minister (2k+ posts)
chorahe per ulta latka do marne tak...dusre kabhi nahin karenge....yumhare magarmuch ke ansuon ka koi faida nahin...
inqelab inqelab islami inqelab
 
Sponsored Link

Featured Discussion Latest Blogs اردوخبریں