حیرانگی کی بات ہےحمزہ شہباز کس طرح اب تک وزیراعلیٰ ہیں: ارشاد بھٹی

hamza-shehbaz-irshad-cm-fr.jpg


حمزہ شہباز وزیر اعلیٰ پنجاب رہیں گے یا نہیں، ان کے مستقل کا فیصلہ آج ہوجائے گا، اس حوالےسے جیو نیوز کے پروگرام رپورٹ کارڈ میں میزبان علینہ فاروق شیخ نے تجزیہ کار ارشاد بھٹی سے گفتگو کی۔

ارشاد بھٹی نے کہا کہ حیرانگی کی بات ہے کہ حمزہ شہباز کس طرح اب تک وزیراعلیٰ ہیں، کیا اس ملک میں کوئی آئین و قانون نہیں ہے، باپ اور بیٹے پر فرد جرم عائد ہونی تھی لیکن وزیراعظم اور وزیراعلیٰ بن گئے۔

ارشاد بھٹی نےمزید کہا کہ پچیس منحرف اراکین کے ڈی سیٹ ہونے کے بعد حمزہ شہباز کی وزیراعلیٰ رہنے کی گنجائش نہیں رہ جاتی، حمزہ شہباز غیرقانونی وزیراعلیٰ ہیں ان کی کابینہ اور بجٹ غیرقانونی ہے، حمزہ شہباز کو دھونس دھاندلی سے حکومت بنانے پر سزا بھی دینی چاہئے۔


پروگرام میں شریک تجزیہ کار سلیم صافی کا کہنا تھا کہ موجودہ اسمبلیاں کل بھی جعلی تھیں آج بھی جعلی ہیں،لیڈر آف دی ہاؤس بدلنے سے اسمبلی اصلی نہیں ہوجاتی،پی ٹی آئی حکومت کے بعد موجودہ نظام بھی چلتا نظر نہیں آرہا ہے، سندھ میں جے یو آئی نے پیپلز پارٹی کی دھاندلی کیخلاف دھرنے دیئے ہوئے ہیں، حکومت کو عمران خان سے نہیں ڈرنا چاہئے وہ امپائر کی سرپرستی کے بغیر کچھ نہیں کرسکتا۔

بینظیر شاہ نے کہا کہ سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد پنجاب میں وزیراعلیٰ کا دوبارہ الیکشن ہی حل ہے، ن لیگ کو اعتماد حاصل کرنے کیلئے پنجاب کے ضمنی انتخابات میں کامیابی حاصل کرنا ہوگی۔


انہوں نے کہا کہ خصوصی نشستیں خالی ہوں تو اسے جلد از جلد بھردینا چاہئے،پنجاب اسمبلی میں 20نشستیں خالی ہیں اس صورتحال میں الیکشن کمیشن کا موقف درست تھا کہ جلد از جلد ضمنی انتخابات کروائے جائیں، ن لیگ تمام بیس نشستیں جیت جاتی ہے تو پی ٹی آئی کو پانچ مخصوص نشستیں کیسے دی جاسکتی ہیں۔

پروگرام میں شریک تجزیہ کاروں سے سوال کیا گیا کہ پی ٹی آئی کیا اتنا دباؤ ڈال پائے گی کہ فوری انتخابات ہوں؟ جس پر ارشاد بھٹی نے کہا کہ فوری انتخابات ہونے چاہئیں کیونکہ پہلے حکومت نے کہا کہ آئی ایم ایف سے معاہدہ نہیں ہوا تو ملک دیوالیہ ہوجائے گا، معاہدہ تو کرلیا اب انتخابات کروائیں۔

ارشاد بھٹی نے کہا کہ شہباز حکومت کے پاس چوں چوں کا مربع کے سوا کچھ نہیں ہے، ان کی اسپیڈ کو سلام ہے جو خادم اعلیٰ سے خادم پاکستان بن گئے ہیں، ان کے پاس روز خوشخبریاں ہیں یہ نہ کیا تو ملک تباہ ہوجائے گا، ملک دیوالیہ ہوجائے گا، ایک زرداری سب پر بھاری اور نواز شریف نے کہا تھا ہمارے پاس بہترین ٹیم ہے،تجربہ بھی ٹیم بھی ہے، مولانا صاحب نے کہا مسائل حل کرینگے۔

ارشاد بھٹی نے طنزیہ کہا کہ ڈالر، مہنگائی، غربت کنٹرول میں آئی، آئی ایم ایف کے سامنے یہ لیٹ گئے، چین نے آپ کو بلایا نہیں، بلاول بھٹو صاحب کو سلام۔

وزیراعلیٰ پنجاب کے الیکشن اور حلف برداری کے خلاف تحریک انصاف اور اسپیکر پرویز الہیٰ کی اپیلوں پر فیصلہ آج متوقع ہے، لاہورہائیکورٹ میں سماعت جاری ہیں، درخواستیں منظور ہوئیں تو حمزہ شہباز وزیراعلیٰ نہیں رہیں گے۔
 
Advertisement
Sponsored Link