سود کے حق میں سپریم کورٹ سے اپیل واپس لیں:وزیرخزانہ کی نیشنل بینک کو ہدایت

nbp-mifta-ismail-sud.jpg


وفاقی وزیرخزانہ نے نیشنل بینک پاکستان کو ہدایت کی ہے کہ وہ سپریم کورٹ میں وفاقی شرعی عدالت کے سود کے حوالے سے حالیہ فیصلے کیخلاف دائر کردہ اپنی اپیل واپس لےسود کے حق میں سپریم کورٹ سے اپیل واپس لیں، وزیرخزانہ کی نیشنل بینک کو ہدایت لیں۔

تاہم سپریم کورٹ میں سود کیخلاف وفاقی شریعت کورٹ کے فیصلے کو چیلنج کرنے کے بعد اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے تاحال کوئی فیصلہ نہیں کیا۔ مفتاح اسماعیل کا کہنا تھا کہ میں نے این بی پی سے کہا ہے کہ وہ اپنی پٹیشن واپس لیں۔

اسٹیٹ بینک کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ وہ اس معاملے پر بینک والوں سے بات کریں گے۔

دوسری جانب اسٹیٹ بینک اور نیشنل بینک کے علاوہ کچھ نجی بینکوں نے بھی سپریم کورٹ سے شریعت کورٹ کے فیصلے کیخلاف رجوع کر لیا ہے۔ حکومت اور نجی بینکوں کے اقدامات پر ملک کے سرکردہ مذہبی اسکالرز نے تنقید کی ہے۔

جماعت اسلامی نے بھی غم و غصے کا اظہار کیا ہے اور ان بینکوں کے بائیکاٹ کی مہم چلا رہی ہے جنہوں نے اس فیصلے کو چیلنج کیا ہے۔ جے یو آئی ف کے وفاقی وزیر مولانا اسعد محمود نے پیر کو قومی اسمبلی میں اپنے خطاب میں حکومت کو خبردار کیا کہ ان کی جماعت سرکاری بینکوں کی جانب سے ایسے اقدام قبول نہیں کرے گی۔

اسی دوران اسلامی نظریاتی کونسل نے منگل کو پریس ریلیز جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ کونسل نے وزیراعظم شہباز شریف کو خط لکھ کر کہا ہے کہ وہ اس معاملے میں مداخلت کرکے سپریم کورٹ میں اسٹیٹ بینک کی اپیل خارج کرائیں۔

یاد رہے کہ وفاقی شرعی عدالت کی جانب سے ربا کے خلاف دیئے گئے فیصلے میں کہا گیا ہے کہ سود سے پاک بینکاری دنیا بھر میں ممکن ہے، وفاقی حکومت کی جانب سے سود سے پاک بینکنگ کے منفی اثرات سے متفق نہیں، معاشی نظام سے سود کا خاتمہ شرعی اور قانونی ذمہ داری ہے۔

اسلامی بینکاری نظام رسک سے پاک اور استحصال کیخلاف ہے۔ ملک سے ربا کا خاتمہ ہر صورت کرنا ہوگا۔ ربا کا خاتمہ اسلام کے بنیادی اصولوں میں سے ہے۔ بینکوں کا قرض کی رقم سے زیادہ وصول ربا کے زمرے میں آتا ہے۔ بینکوں کا ہر قسم کا انٹرسٹ ربا ہی کہلاتا ہے۔

فیصلے میں یہ بھی کہا گیا کہ قرض کسی بھی مد میں لیا گیا ہو اس پرلاگو انٹرسٹ ربا کہلائے گا۔ عدالت نے حکم دیتے ہوئے کہا کہ ربا مکمل طور پر ہر صورت میں غلط ہے۔
 
Advertisement

thinking

Prime Minister (20k+ posts)
Pehlay apnay pao par kharay ho jao.Phir Sood se pak economy khari ki ja sakti ha.Dunia k tamam Muslims countries Sood lenay ur denay ki economy chala rehay hain.including KSA.all ME countries. Turkiya..Ham Gov ki jo bhi facilities use kartay hain. Roads. Metros.Rails.Electricity. Gas.Oil.Gov Salaries aur tamam adaro ki khidmaat.ye sab Sood lenay aur denay se provide ki jati hain..Jo mulk Sood walay qarazo se chalta ho wahan ap ne kia Sood k khalaf jahad karna ha..Munafiqat Choro.Sach ko mano..
 

thinking

Prime Minister (20k+ posts)
Banks m max ap ye kar saktay ho k Banks m Sood k sath sath ap bila Sood qarazay aur khidmaat bhi provide karo aik limited range m.Aisa ME k Banks kartay hain. Majoda international banking system m Sood lenay ur dia bina koi Private Bank nahi chal sakta..
 

Hunter1

Senator (1k+ posts)
Banks m max ap ye kar saktay ho k Banks m Sood k sath sath ap bila Sood qarazay aur khidmaat bhi provide karo aik limited range m.Aisa ME k Banks kartay hain. Majoda international banking system m Sood lenay ur dia bina koi Private Bank nahi chal sakta..

that what you think, interest is the root of all bad things that are happening
 
Sponsored Link