نواز شریف کو باہر بھیجنے کا فیصلہ کس نے کیا؟اسد عمر کی وضاحت

2asadwazahat.jpg

پاکستان تحریک انصاف کے رہنما اور وفاقی وزیر اسد عمر نے نواز شریف کے بیرون ملک جانے سے متعلق اپنے بیان کی وضاحت کردی,انہوں نے کہا کہ ان کے بیان کو غلط انداز میں پیش کیا جارہاہے۔

اسد عمر نے کہا کہ نواز شریف کے بیرون ملک جانے سے متعلق وزیراعظم عمران خان فیصلےکرتے ہیں یا کوئی اور، پروگرام میں بحث اس تناظر میں تھی، نواز شریف کو ملک سے جانے دینےکا فیصلہ کابینہ میں مشاورت کے بعدکیا گیا۔


اسدعمر نے واضح کیا کہ نواز شریف کو ملک سے جانے دینے کا فیصلہ کابینہ میں مشاورت کے بعدکیا گیا،کسی بیرونی طاقت نے نواز شریف کو جانے دینےکا فیصلہ مسلط نہیں کیا۔

وفاقی وزیر نے مزید کہا کہ کسی بیرونی طاقت نے ہم پرنواز شریف کو جانے دینےکا فیصلہ مسلط نہیں کیا، وزیراعظم نےنواز شریف کو ملک سے جانے دینےکا فیصلہ کیا،میں نے بھی حق میں ووٹ دیا، یہ بعد میں واضح ہوا کہ جن میڈیکل رپورٹس کی بنیاد پر فیصلہ کیا وہ جھوٹی ثابت ہوئیں۔

اس سے قبل اقی وزیر منصوبہ بندی اسد عمر کا کہنا تھا کہ سابق وزیراعظم نوازشریف کو باہر بھیجنے کا فیصلہ 100 فیصد عمران خان کا تھا۔

ایک بیان میں اسد عمر نے کہا کہ جس میٹنگ میں نواز شریف کو باہر بھیجنے کا فیصلہ ہوا، میں اس میں شریک تھا، جس وقت یہ ڈسکشن ہوئی کمرے میں 6 سے 8 لوگ بیٹھے تھے جب کہ نواز شریف کو بھیجنے کا معاملہ پہلے کابینہ میں ڈسکس ہوا تھا۔

انہوں نے کہا کہ نواز شریف کو باہر بھیجنے کا فیصلہ 100 فیصد عمران خان کا تھا اور عمران خان نے یہ نہیں کہا کہ یہ فیصلہ ان کا نہیں تھا۔

وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی کی سینئر لیڈر شپ کمرے میں بیٹھی تھی اور نواز شریف کو باہر بھیجنےکے فیصلے پر سب کی رائے مختلف تھی۔
 
Advertisement
Sponsored Link