نجی چینل کے صحافی نوازشریف کے فیصلے کو بھٹو کے فیصلے سے تشبہہ دینے لگے

saleem-khans-afi.jpg


ملکی سیاست میں ہلچل مچی ہوئی ہے، موجودہ حکمران اور اپوزیشن کے درمیان ایک کے بعد مشن امپوسبل جاری ہے، جیو نیوز کے پروگرام ”رپورٹ کارڈ“ میں میزبان علینہ فاروق شیخ نے نامور تجزیہ کاروں کو بٹھایا اور بے شمار سوالات سے ملکی صورتحال کے بارے میں پوچھا۔

میزبان نے تجزیہ کاروں سے سوال پوچھا کہ ن لیگ یا حکومت، ثاقب نثار کی مبینہ آڈیو کے معاملہ پر کس کا موقف درست ہے؟ جس کے جواب میں تجزیہ کاروں نے کہا کہ نواز شریف کیخلاف کیس بھی بھٹو کیس جیسا متنازع ہے، نواز شریف کو عاصمہ جہانگیر کانفرنس میں خطاب کا موقع نہیں دینا چاہئے تھا،اظہار رائے کی آزادی بہت خوبصورت ہے لیکن بھونکنے اور کاٹنے کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔


ارشاد بھٹی نے کہا کہ ثاقب نثار کے خلاف الزامات اور مبینہ آڈیو ٹیپ ابھی تک کسی عدالت میں ثابت نہیں ہوئے ، مریم نواز نے جج ارشد ملک کی ویڈیو بھی چلائی تھی لیکن جب ایف آئی اے نے سوالنامہ دیا تو شہباز شریف سے مریم نواز تک سب نے ہی یوٹرن لے لیا۔


تجزیہ کاروں نے کہا کہ ہاؤس آف شریف کا عدلیہ، فوج اور اداروں کو دباؤ میں لانے کا پرانا طریقہ ہے،چیف جسٹس گلزار احمد کو جسٹس شوکت صدیقی ، رانا شمیم اورثاقب نثار کو بلا کر سنیں اگر فیصلہ خلاف آتا ہے تو نوا ز شریف کو دوبارہ موقع دیں۔

واضح رہے کہ اس وقت ملک میں جہاں قانون سازی سے متعلق حکومتی اقدامات پر اپوزیشن برہم ہے وہیں سابق چیف جج گکلت بلتسان رانا شمیم کے انکشافات نے ایک نیا موڑ لے لیا ہے، کہانی کسی رخ جائے گی کون کتنا درست ثابت ہوگا ابھی کچھ کہنا قبل ازوقت ہوگا۔
 
Advertisement

The Sane

Chief Minister (5k+ posts)
دونوں کا اتنا تعلق تو ضرور ہے کہ کھوتی کا پتر شریف بھی بھٹو کو لٹکانے میں شریک تھا
 

ranaji

President (40k+ posts)
ہے جن منافقوں کو پورے پاکستان میں رام گلی امرتسر کے چکلے کئ گندی موری کی گندی اینٹ حرام کا نطفہ فراڈیا بےغیرت چور حرام خور منی لانڈر خنزیر النسل نواز شریف جیسا گھٹیا نئچ اور لعنتی دو ٹکے کا فراڈیا ہی ملا تھا
ایک ایسا خنزیر النسل گھٹیا نیچ فراڈیا جو پنجابی بھی نہیں بلکہ کشمیری بھی نہیں بلکہ بنا ہوا تھا جعلی کشمیری نطفہ حرام بے نسلا

جس کی ابتدا رام گلی امرتسر کے چکلے سے ہوئی تھی جس کو پنجابی جرنیل ضیا نے اپنے دوغلی نسل کے کتے کی طرح پال کر لوٹ مار کے لئے چھوڑ دیا جس نطفہ حرام گھٹیا نیچ اور لعنتی نے ایک سندھی وزیر اعظم کے خلاف جاگ پنجابی جاگ کا نعرہ لگا کر صوبائی منافرت کی بنیاد رکھی ہر بار پنجابی جرنیلوں کے کندھے پر بیٹھ کر یہ خنزیر النسل مسلط ہوا جعلی پنجابی اور جعلی کشمیری بے نسلا جس کی ابتدا چکلے سے کوئی اس خنزیر النسل نے سندھی وزیر اعظم بے نظیر بٹھو اور شہید بے نظیر بھٹو کی بیوہ نصرت بھٹو کی فوٹو شاپ ننگی تصویریں ہیلی کاپٹر سے پورے پاکستان میں پھکوا کر پیپلز پارٹی کے سٹرونگ ہولڈ پنجاب میں نفرت اور مزہبی منافرت پھیلا کر پیپلز پارٹی کا صفایا پنجاب میں کیا

پنجابی نہ ہوُنے کے باوجود اس نطفہ حرام خنزیر النسل چکلے والے نے پنجابیوں میں سندھ کے خلاف نفرت پھیلا کر صوبائی تعصب پھیلا کر ووٹ لئے اور ہر بار پنجابی مافیا اور پنجابی مافیا پنجابی ججز کی مدد سے بار بار برسر اقتدار آیا

اس خنزیر النسل جعلی پنجابی کی وجہ سے باقی قومیتوں میں پنجاب کے خلاف جزبات ابھارے اب بھی حر ام کے نطفے خواجہ سرا سعد رفیق کشمیری گشتی زاد جیسے نیولے کئی بار پنجابی کارڈ استعمال کرنے کے بعد زلیل ہو چکے یہ نطفہ حرام نیولا اپنے حلقے میں اور جلسوں میں بھونکتا رہا ہے

کچھ لوگو ں کے بقول اس کی ماں نے کچھ شرمناک وجوہات کی وجہ سے اپنے شریف اور نہایت غریب خاوند کو قتل کراکے اس کا الزام ایک سندھی وزیر اعظم پر لگا کر اس کو کیش کرایا

اور سندھی بھٹو کے خلاف پنجاب میں نفرت اُبھار کر جنرل ضیا تک رسائی حاصل کرلی حالانکہ کہ اس نیولے سعد کا باپ خواجہ رفیق امرتسر سے آیا ہوا پانڈی ایک نہایت غریب اور محنت کش دیہاڑی دار مزدور تھا اور مختلف سیاسی پارٹیوں کے بینرز پوسٹرز لگا لگا کر مزدوری کرتا تھا اس کی پراسرار موت کو بھی ان ۔۔۔زادوں نے بھٹو کے زمے لگا کر سندھی وزیراعظم کے خلاف نفرت پھیلائی

اور جنرل ضیا کی قربت حاصل کی کہ جنرل ضیا کے وزیر چوہدری ظہور الہی کی زکات پر پلا بڑھا

سوچنے کی بات ہے کہ اسکا باپ ایک معمولی غریب شریف مزدور اور بھٹو جیسے بین الاقوامی لیڈر نے اس دیہاڑی دار مزدور خواجہ رفیق کو کیوں مروانا تھا کیا وہ کوئی اسکا سیاسی حریف تھا کوئی خطرہ تھا ؟
حالانکہ جو امرتسر سے آیا ہوا ایک کشمیری پانڈی تھا وہ ایک غریب اور شریف مزدور اور دیہاڑی دار تھا ایسے مزدور روزانہ کیڑوں مکوڑوں کی طرح روازانہ مر جاتے ہونگے

مگر بھٹو جیسے بینُ الاقوامی لیڈر کو ایک مزدور سے کیا خطرہ تھا وہ کیا چیز تھی وہ کون سا کوئی کسی سیاسی کا سربراہ تھا
کونسا وہ کوئی ایسی توپ چیز تھا کہ بھٹو جیسا لیڈر جس کو مروا دیتا

جس کے ہونے نہ ہونے سے بھٹو کو کیا فرق پڑتا

اس سے کیا خطرہ ہونا تھا مگر ان ۔۔زادوں نے اس کی پر اسرار موت کو بھٹو اور سندھ کے خلاف نفرت پھیلانے کے لئے استعمال کیا کہ اس کو بھٹو نے مروایا صوبائی تعصب کا آغاز ہی امرتسر رام گلی کے چکلے والے ٹبر کے نواز شیریف اس کے چمچے ضیا کے گٹر کی پیداوار ان خنزیر النسل خواجہ سراؤں نے پہلے ضیا اور پھر نوازشریف کی سرکردگی میں کیا سندھ کے خلاف نفرت اُبھار ی

اور بھٹو کو ایک ولن بنا کر اپنی حکومت بچاتے رہے یہ ۔۔۔زادے سندھی خواتین لیڈروں کی کبھی ننگی تصویریں کبھی جاگ پنجابی کبھی ایٹم بم کے خالق ذوالفقار علی بٹھو کو غدار ثابت کرکے جنرل ضیا سے فائدے اٹھاتے رہے اور اس جنرل ضیانے اپنے اقتدار کی طوالت کے لئے ان ۔۔۔زادوں کو پروجیکٹ کیا اور ان ۔۔۔زادوں نے ایٹمی پروگرام کے خالق کو غدار اور قابل نفرت ثابت کرنے میں جاگ پنجابی جاگ اور سندھی جونیجو کو ہٹانے سندھی بھٹو کو پھانسی لگوانے میں پورا پورا کردار ادا کیا

پنجابی جج اور پنجابی جرنیل استعمال کیے اپنے اقتدار کے لئے وہی پنجابی مافیا اب عمران کے پنجابی نہ ہونے کو اس کے نیازی پٹھان ہونے کو اب منافرت کے لئے استعمال کر رہا ہے جعلی پنجابی نوا ز شر یف ، احسن اقبال ، منشیات فروش ہوشیاری پوری گشتی کی اولاد رانا ثنا اصلی کنجر ماڈل ٹاؤن کا قاتل ۔ شہباز شریف ، حمزہ ککڑی اور نواز شریف کی ماں کی دائی کی بد صورت گٹھی بونی بیٹی بل بتوڑی عمران خان کوعنران خان کبھی نہیں پکارتے بلکہ اس کو نیازی اس انداز میں پکارتے ہیں کہ جیسے نیازی پٹھان کوئی بہت گھٹیا لوگ ہیں اور اگر عمران خان کو صرف نیازی پکارے گے تو شاید اسکی بہت توہین ہوجائے گی انکے نزدیک جیسے نیازی گالی ہے کوئی بہت گھٹیا لوگ ہیں نیازی

جیسے نواز شیریف بے نسلا اور امرتسر کے چکلے کی پیداوار نہیں بلکہ بہادر شاہ ظفر کے شہزادوں میں سے ہے
ویسے پاکستانیوں کی اطلاع کے لئے عرض ہے کہ عمران خان اپنے نام کے ساتھ فخر سے ہر نیازی کی طرح نیازی لکھتا ہے
یہ خنزیری النسل جعلی پنجابی جعلی کشمیری نیازی نام اس ہتک آمیز انداز میں لیتے ہیں جیسے نیازیوں نے انکی بے بے کے ساتھ کوئی جبری ۔۔۔ کردیا تھا۔ در لعنت در در لعنت اب دوبارہ پٹھانوں اور نیازیوں کے خلاف تعصب پھیلانے والے نطفہ حراموں در لعنت اور تو

اور افغانی گشتی کی استعمال شدہ صافی نسوار فروش جیسا جم گشتی زاد اور چند اسی کی نسل کے صحافی نیازی نام اس ہتک کے ساتھ لیتے ہیں جیسے نیازی کوئی بہت گھٹیا لوگ ہیں
جبکہ عمران نواز شریف بٹ اور غلام دستگیر بٹ کی طرح بٹ نہ لکھ کر اور خان اور میاں لکھ کر کسی احساس کمتری کا شکار نہیں ہوتا
ان امرتسری چکلوں والوں کی یہ عادت بھی ہے جج اور جرنیل خریدو جو نہ بکے اسکے خلاف نفرت انگیز مہم چلاؤ جو جج نہ خریدا جائے اس کے خلاف اپنے پالتو صحافیوں بار کونسلوں میڈیا ہاوسز کے خلاف اسی انداز میں مہم چلاؤ جیسے اب تک چلاتے آئے ہیں
ان چکلے والے ٹبر نے اپنے کالئے زبیر عمر چوڑے کو باجوہ کے پاس بھیجا جب اس نے بکنے سے انکار کردیا تو اس کے خلاف اور پوری فوج کے خلاف نفرت انگیز مہم چلانی شروع کردی
یہ پنجابی مافیا اس سے پہلے ججز جرنیل صحافیوں افسروں میڈیا ہاؤسز کو خریدتا رہا
یا بلیک میل کرتا رہا یا ڈرا کر اپنے ناپاک مقاصد حاصل کرتا رہا جو نہ جج نہ بکا اس کے خلاف اپنے پالتو صحافیوں بار کونسلز کو ہڈی ڈال کر انکے خلاف شرمناک مہم چلائی اب تک تو یہ کامیاب ہوتے رہے مگر اب اللہ کے کرم سے یہ بار بار زلیل ہو رہے ہیں اب یہ کوئی مہم۔ چلاتے ہیں آرمی کے خلاف نفرت پھیلاتے ہیں ججز کی پورنو فلمیں بناتے ہیں سوشل میڈیا کی وجہ سے ایکسپوز ہو جاتے ہیں پھر باپ بیٹی پرویز جھوٹ شدید نطفہ حرام پاکستان فوج کے خلاف بھونکنے والا بلڈاگ ،عرفان صدیقی ، کیپٹن صفدر منیرا پمپ ، مختارا پمپ اور انکے پالتو صحافی ہمیشہ پاکستان کی فوج کے خلاف بھونکنے والے کتے روزانہ کوئی نئی سازش رچاتے ہیں مگر اللہ ان کو زلیل کر دیتا ہے
اللہ اکب
 
Sponsored Link