وفاق کےبعدپنجاب میں ق لیگ کاحکومت کوٹف ٹائم،بلدیاتی قانون کی حمایت سےانکار

9pmlqpmln.jpg

پاکستان مسلم لیگ ق اور پاکستان تحریک انصاف کے درمیان بلدیاتی مسودہ قوانین پر مذاکرات میں شدید ڈیڈ لاک پیدا ہو گیا، ق لیگ نے مسودہ قانون کی حمایت سے انکار کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق وفاق کے بعد پنجاب کی سطح پر بھی ق لیگ اور پی ٹی آئی کے مابین ڈیڈ لاک کی صورتحال پیدا ہو گئی، پی ٹی آئی کا ویڈیو لنک پر اتحادی جماعت مسلم لیگ ق کے ساتھ اجلاس ہوا، اجلاس میں وفاقی وزرا اسد عمر، شاہ محمود قریشی اور شفقت محمود شریک ہوئے، پنجاب حکومت کی نمائندگی وزیربلدیات میاں محمود الرشید نے کی جبکہ مسلم لیگ ق کی نمائندگی مونس الہیٰ اورطارق بشیر چیمہ نے کی۔


ق لیگ نے موقف اختیار کیا کہ ایسے مسودہ قانون کی حمایت نہیں کریں گے جس سے دیہی علاقوں کی حق تلفی ہو۔

مسلم لیگ ق کی جانب سے اعلان کیا گیا کہ ایسے کسی قانون کی حمایت نہیں کریں گے جس میں دیہی علاقوں کو نظر انداز کیاجائے ۔ ق لیگ نے مزید کہا کہ نئے بلدیاتی نظام میں سیمی اربن کو زیادہ جبکہ دیہی علاقوں کو کم نمائندگی دی جائے گی جو کہ قابل قبول نہیں۔
 
Advertisement

zaheer2003

Chief Minister (5k+ posts)
مریم کی جب سے میاں عامر محمود کے بارے میں آڈیو لیک ہوئی ہے تو دنیا نیوز نے بھی سپیڈ پکڑ لی ہے۔

وہ پوچھنا تھا کہ اس جاب کے پیسے مل رہے ہیں یا غصے میں کر رہے ہو ؟
 
Sponsored Link